سرکاری وکلاء کی سرکاری اداروں سے فیس وصولی پر سپریم کورٹ کا نوٹس

سرکاری وکلاء کی سرکاری اداروں سے فیس وصولی پر سپریم کورٹ کا نوٹس

اسلام آباد (این این آئی)سپریم کورٹ نے سرکاری وکلاء کی جانب سے سرکاری اداروں سے فیس کی مد میں بھاری رقوم کی وصولی کا نوٹس لیتے ہوئے سرکاری وکلاء کو بیان حلفی جمع کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ سرکاری وکلاء ہونے کے باوجود سرکاری محکموں سے 50,50 لاکھ روپے تک رقم وصول کی گئی۔منگل کوچیف جسٹس میاں ثاقب نثارکی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی ، اس موقع پرچیف جسٹس نے اٹارنی جنرل سے استفسارکیا کہ عدالت نے آپ کو یہ معاملہ سونپا تھا، کیا اس معاملے میں انکوائری کرائی گئی ہے ، ایڈیشنل اٹارنی جنرل کی برطرفی سے معاملہ ختم نہیں ہوگا، پورے معاملے کی چھان بین کی جائے گی چیف جسٹس نے کہاکہ اس معاملے پر تمام سرکاری لاء افسران بیان حلفی جمع کروائیں، اوراٹارنی جنرل سرکاری وکلاء کی جانب سے حکومتی اداروں سے فیس وصولی کے معاملے پرآج ہی عدالت کورپورٹ دیں۔

سرکاری نوٹس

مزید : صفحہ آخر