پاکستانی شہری کی محبت میں ناکامی پر گرفتاری کا بھارتی پراپیگنڈا مسترد

پاکستانی شہری کی محبت میں ناکامی پر گرفتاری کا بھارتی پراپیگنڈا مسترد

قصور(این این آئی)بھارتی سکیورٹی فورسز کی جانب سے گرفتار کیے گئے 32 سالہ شخص کے اہل خانہ نے بھارتی میڈیا کے اس دعوے کو مسترد کیا ہے کہ محمد آصف ’ محبت میں ناکامی ‘ پر بھارتی سرحد پر گیا تاکہ اسے گولی ماردی جائے۔تفصیلات کے مطابق محمد آصف کو 28 مئی کو بھارتی سکیورٹی فورسز نے سرحدی گاؤں جالوکی میں بھارت کی مابوک گاؤں پوسٹ کے قریب سے گرفتار کیا تھا۔ معاملے پر آصف کے والد اور سابق سکیورٹی اہلکار خلیل احمد نے کہا کہ 2 سال قبل ان کے بیٹے میں ذہنی بیماری کی علامات دیکھی گئیں تھیں۔انہوں نے کہا کہ محمد آصف نے کچھ برسوں پہلے انٹر کے امتحانات میں کامیابی حاصل کی تھی اور اس کے بعد سے وہ گاؤں میں ایک نجی سکول چلا رہا تھاتاہم 6 ماہ قبل جب ان کے بیٹے کی حالت زیادہ خراب ہوئی تو اسے لاہور جنرل ہسپتال لے جایا گیا تھاجس کے بعد سے اس کا علاج جاری تھا۔انہوں نے بتایا کہ 28 مئی کی صبح آصف سحری کے وقت اٹھا تھا اور اسے اس دن لاہور میں ڈاکٹر کے پاس جانا تھا۔اسی دن صبح آصف گھر سے باہر گیا تھا اور اہل خانہ کا خیال تھا کے وہ فطری طور پر گھر سے نکلا ہے لیکن پھر وہ واپس لوٹ کر نہیں آیا۔

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...