چکار کے گاؤں میں پانی کے تنازع پر تصادم 3خواتین سمیت درجن افراد شدید زخمی

چکار کے گاؤں میں پانی کے تنازع پر تصادم 3خواتین سمیت درجن افراد شدید زخمی

مظفرآباد(بیورورپورٹ) چکارکے نواحی علاقے موچی گلی چوریاں پانی کے تنازعے پر خونریز تصادم سادات ، گُجر اورقریشی فیملی کے درجن سے زائد افراد سمیت تین خواتین شدید زخمی ، خونریز تصادم قریشی فیملی کی طرف سے پانی کے کنویں پرتالا لگانے سے ہوا ، خونریز تصادم کے دوران قریشی فیملی کے ناکہ لگائے افراد نے سادات اورگُجر قبیلے کے افراد کو آہنی ڈنڈوں ، سوٹوں اورخنجروں کے وار کرکے کنویں کے قریب ہی ڈھیرکردیا ، مخالفین کے پتھراؤ سے ایک گھر بھی متاثر ، ایک موٹرسائیکل کو توڑ کر جلانے کی کوشش ۔تھانہ پولیس چکارنے فریقین کی درخواستوں پر خونریز تصادم کا مقدمہ درج کرلیا ہے ۔پولیس نے متحارب گروپوں کے چارچارافراد فوری گرفتارکرکے حوالات بند کردیئے ۔ہردوفریقین نے کراس پرچے میں تقریب 36کے قریب ملزمان کو نامزد کیا ہے جن میں خواتین بھی شامل ہیں ۔شدید زخمی رورل ہیلتھ سینٹر چکارسے ابتدائی طبی امداد کے بعد ڈی ایچ کیو ہٹیاں بالا ریفر کردیئے گیے ہیں جنکی حالت تسلی بخش بتائی جاتی ہے ۔ موچی گلی چوریاں پانی پر خونریز تصادم کا سنتے ہی چکارمیں خوف وہراس پھیل گیا ، سینکڑوں افراد زخمیوں کی عیادت کرنے کے لیے رورل ہیلتھ سینٹر چکارپہنچ گیے ، جہاں ایمرجنسی میں ادویات کی عدم فراہمی اورشدید زخمیوں کو ایمبولینس فراہم نہ کیے جانے پر عوام کا حکومت کے خلاف شدید احتجاج ، زخمیوں کو ٹی ٹی کے انجکشن تک رورل ہیلتھ سینٹر چکارمیں نہ مل سکے ۔ تفصیلات کے مطابق تھانہ پولیس چکارکی حدود موچی گلی ٹاپ پانی تنازعے پر تصادم میں سید صیاد حسین شاہ انکے بیٹے اوراہلیہ شدید زخمی ، چوہدری محمد ارشاد اورانکے بھائی کے بازوں ٹوٹے گیے ، صیاد حسین شاہ کے بیٹے عجب حسین شاہ کے ہاتھ پر خنجر پھرنے سے ہاتھ اورانگلیاں کٹ گئیں ، قریش فیملی کے محمد خورشید ولد اما م دین ، محمد سفیر ولد محمد شریف اوردیگر افراد زخمی ہوئے ،خونریز تصادم کی وجہ قریشی فیملی کاکنویں پر تالا لگانا بنی ، گزشتہ شام ساڑھے پانچ بجے کے قریب جب تندوعہ موچی گلی سادات اورگُجر فیملی کی خواتین کنواں دُنبہ پانی پر پانی لانے گئیں تو قریشی فیملی کے افراد نے کنویں کو تختوں سے ڈھانپ کر تالا لگا رکھا تھا ، قریشی فیملی کے کنویں پرموجود افراد اورخواتین نے سادات فیملی کی خواتین کو پانی دینے سے انکارکردیا جس پر فریقین کے درمیان تصاد م شروع ہوا ۔ موچی گلی ٹاپ اورچوریاں میں گزشتہ کئی ماہ سے پانی کی شدید قلت ہے چکارکے گنجان آبادی والے اس بالائی ایریا میں پانی کے صاف پانی کا صرف ایک کنواں ہے جوعرصہ دراز سے عوام کے درمیان وجہ تنازعہ بنا ہوا ہے کنویں کے پانی کی تقسیم پر متعد د دفعہ لڑائی جھگڑے ہوچکے ہیں ۔خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ اگر کنویں کے پانی کی تقسیم کا بہتر حل نہ تلاش کیا جاسکا تو اس پر کئی قیمتی جانوں کا ضیاع ہوسکتا ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...