افطاری کے دوران دوخواتین اور ایک مرد مسجد آیا اورپھر ایسا کام کردیا کہ ہرطرف خون کی ندیاں بہہ نکلیں، لاشوں کے ڈھیر لگ گئے کیونکہ ۔ ۔ ۔

افطاری کے دوران دوخواتین اور ایک مرد مسجد آیا اورپھر ایسا کام کردیا کہ ...
افطاری کے دوران دوخواتین اور ایک مرد مسجد آیا اورپھر ایسا کام کردیا کہ ہرطرف خون کی ندیاں بہہ نکلیں، لاشوں کے ڈھیر لگ گئے کیونکہ ۔ ۔ ۔

دیفا(ویب ڈیسک) نائیجیریا کی ایک مسجد میں افطار کے دوران یکے بعد دیگرے تین خودکش حملوں میں کم ازکم 10 افراد شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق افریقی ملک نائیجیریا کے جنوب مشرقی شہر دیفا میں واقع مقامی مسجد میں تین خودکش حملے کیے گئے، حملہ آوروں نے افطار کرنے والوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنایا۔حکام کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں میں دو خواتین اور ایک مرد شامل تھے جنہوں نے مسجد کے اندر داخل ہوکر افطار میں مصروف افراد کے درمیان خود کو دھماکا خیز مواد سے اڑادیا نتیجے میں 10 افراد شہید اور 80 سے زخمی ہوئے۔

حکام کے مطابق زخمیوں میں بعض کی حالت تشویش ناک ہے جن کی جان بچانے کی کوششیں کی جارہی ہیں تاہم بعض زخمیوں کی حالت نازک ہونے کی وجہ سے اموات میں اضافے کا خدشہ ہے۔

ابتدائی طور پر کسی عسکریت پسند گروپ یا تنظیم نے واقعے کی ذمہ داری قبول نہیں کی تاہم نائیجیریا، چاڈ اور کیمرون شدت پسند تنظیم بوکوحرام کے گڑھ سمجھے جاتے ہیں جہاں یہ تنظیم ماضی میں خودکش حملوں کی ذمہ داری قبول کرتی رہی ہے۔

مزید : بین الاقوامی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...