” ان کو روزانہ کا ایک لاکھ روپے جرمانہ کریں اور پھر ایک ہفتے بعد ہی۔۔۔“ چیف جسٹس نے ایسا ’حکم‘ دیدیا کہ سیاستدانوں کی چیخیں نکل جائیں گی

” ان کو روزانہ کا ایک لاکھ روپے جرمانہ کریں اور پھر ایک ہفتے بعد ہی۔۔۔“ چیف ...
” ان کو روزانہ کا ایک لاکھ روپے جرمانہ کریں اور پھر ایک ہفتے بعد ہی۔۔۔“ چیف جسٹس نے ایسا ’حکم‘ دیدیا کہ سیاستدانوں کی چیخیں نکل جائیں گی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کوئٹہ(ویب ڈیسک) محکمہ نظم و نسق بلوچستان نے سرکاری گاڑیاں واپس نہ کرنے والے سابق صوبائی وزرا، مشیروں اور معاونین پر آج سے ایک لاکھ روپے یومیہ جرمانے کا فیصلہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز سپریم کورٹ میں لگڑری گاڑیوں کے استعمال سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے رات تک بلوچستان کے 7 سابق وزراءکو اپنی گاڑیاں جمع کرانے کی ہدایت کی تھی۔چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ گاڑیاں جمع نہ کرانے پر ایک لاکھ روپے یومیہ جرمانہ ہوگا اور ایک ہفتے کے بعد جرمانہ 2 لاکھ روپے روزانہ ہوجائے گا۔

سرکاری ذرائع کے مطابق صوبے میں حکومت کی تحلیل کے بعد سابق وزراء، مشیروں اور معاونین سے سرکاری گاڑیوں کی واپسی کا عمل جاری ہے اور اب تک محکمہ نظم ونسق کو 50 گاڑیاں وصول ہو چکی ہیں جبکہ 20 سے زائد گاڑیاں تاحال محکمے کو موصول نہیں ہوئی ہیں۔سرکاری گاڑیوں کی واپسی کے لیے دو روز قبل کی ڈیڈلائن مقرر کی گئی تھی، اس سلسلے میں متعلقہ افراد کو حتمی نوٹسز بھی جاری کیے جا چکے ہیں۔محکمہ نظم ونسق کے ذرائع کے مطابق سپریم کورٹ کے حکم پر بلوچستان میں سرکاری گاڑیاں واپس نہ کرنے والوں کو بدھ سے یومیہ ایک لاکھ روپے جرمانہ عائد کیا جائے گا۔

مزید : علاقائی /بلوچستان /کوئٹہ