سپریم کورٹ نے کاغذات نامزدگی کے ساتھ بیان حلفی جمع کرانے کا فیصلہ دباﺅ پر دیا;قمر زمان کائرہ

سپریم کورٹ نے کاغذات نامزدگی کے ساتھ بیان حلفی جمع کرانے کا فیصلہ دباﺅ پر ...

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)پیپلز پارٹی کے رہنما قمر زمان کائرہ نے کہاہے کہ سپریم کورٹ نے کاغذات نامزدگی کے ساتھ بیان حلفی جمع کروانے کا فیصلہ میڈیا کے دباﺅ پر دیا ۔یہ فیصلہ ضروری نہیں تھا کہ کیونکہ جب امیدوار کاغدات نامزدگی میں 62اور 63کاپابند ہونے کا اقرار کرتا ہے تو اس میں سب کچھ آجاتا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام ”آف دی ریکارڈ“ میں گفتگو کرتے ہوئے قمر زمان کائرہ نے کہا ہے کہ کاغذات نامزدگی کے ساتھ حلف نامہ دینے کا سپریم کورٹ کا فیصلہ ضروری نہیں تھا ۔ انہوں نے کہا کہ اگر کاغذات نامزدگی میں ایک بند ہ 62اور 63کا پابند ہونے کا اقرار کرتا ہے تو اس میں سب کچھ آجاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ عدالت نے میڈیا کے دباﺅ میں دیا ہے اور  عمل در آمد ہوجائے گا لیکن اگر کاغذات نامزدگی بیان حلفی کے بغیر بھی جمع ہو جاتے تو کوئی قیامت نہیں آجانی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف اپنے خلاف ہونیوالے کیسز کوبھی دھاندلی کہتے ہیں اور اگر یہ دھاندلی ہے تو وہ اپنے پچھلے گناہوں پر معافی مانگ لیں۔ نواز شریف کے اپنے ہاتھ سے بنائے گئے قوانین کے نتیجے میں بے نظیر بھٹو آج ایک شہر میں اور کل دوسرے شہر میں پیشیاں بھگت رہی ہوتی تھیں۔

مزید : قومی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...