کامیابی کیلئے کھلاڑیوں کو بھر پور محنت کرنی ہوگی، مطاہر سہیل

کامیابی کیلئے کھلاڑیوں کو بھر پور محنت کرنی ہوگی، مطاہر سہیل

  

اسلام آباد (اے پی پی) مطاہر بیڈمنٹن اکیڈمی راولپنڈی کے سربراہ مطاہر سہیل نے کہا ہے کہ بین الاقوامی سطح پر ملک کا نام روشن کرنے کے لئے کھلاڑیوں کو بھر پور محنت کرنی ہوگی۔ گذشتہ روز اے پی پی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بیڈمنٹن کا کھیل ایک مہنگا کھیل ہے جو عام بچہ نہیں کھیل سکتا لیکن ملک میں اس کا بے پناہ ٹیلنٹ موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ بیڈمنٹن کی ترقی کے لئے گراس روٹ سطح پر اقدامات اٹھانے ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ بیڈمنٹن میں پاکستان نے بین الاقومی سطح کئی میڈلز حاصل کر رکھے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں مطاہر سہیل نے کہا کہ کورونا وائرس کی وباء نے اس وقت پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے اور کھلاڑیوں کے کھیلوں کے میدانوں کو ویران کر دیا۔ انہوں نے نے کہا کہ کھلاڑی گھروں میں رہ کر اپنی فزیکل فٹنس اور خوراک پر توجہ دیں تاکہ کورونا وائرس کی وباء کے باعث ان کی فزیکل فٹنس میں کمی نہ آئے اور قوت مدافعت بھی کم نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ کھلاڑیوں کو حکومت کی جانب سے بتائی گئی احتیاطی تدابیر پر عمل کرنا چاہئے اور اس کے ساتھ ساتھ سماجی فاصلوں کا بھی خیال رکھیں، عوام کو ان حالات میں حکومت کے ساتھ تعاون کرنا چاہئے کیونکہ حکومت انسانوں کی زندگیاں بچانے کی کوشش کر رہی ہے اور اس وقت پوری دنیا میں کورونا وائرس کی وباء کے باعث لاکھوں کی تعداد میں اموات ہو چکی ہیں۔

اور ابھی تک اس موذی وباء پر قابو نہیں پایا جاسکا۔

  ان کا قد بھی بالنگ میں انہیں کافی مدد فراہم کرتا ہے لہٰذا اُن کا مستقبل تابناک ہے۔دانش کنیریا کے مطابق محمد حسنین نے ٹی ٹوئنٹی میں ملک کی نمائندگی کی تاہم ان کی کارکردگی میں تسلسل نہیں۔ محمد حسنین اور نسیم شاہ کو مسلسل انجریز کا بھی سامنا ہے جو کہ اچھی بات نہیں لہٰذا کیریئر کو طوالت دینے کیلئے انہیں اس جانب دھیان دینا ہوگا۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ بابر اعظم، اظہر علی اور شان مسعود اچھے کھیل کا مظاہرہ کررہے ہیں تاہم اگر کسی ایک کھلاڑی کی بات کی جائے تو بابر اعظم سب سے نمایاں ہیں جنہوں نے گراؤنڈ میں اپنی کارکردگی سے خود کو ثابت کیا۔ اسد شفیق 60سے زائد ٹیسٹ کھیل چکے تاہم ان کے اعداد و شمار ظاہر کرتے ہیں کہ وہ زیادہ متاثر نہیں کر سکے۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -