"2011 میں میں صرف 14 سال کا تھا" مخدوم شہاب الدین کے ٹویٹ پر سنتھیارچی نے معافی مانگ لی

"2011 میں میں صرف 14 سال کا تھا" مخدوم شہاب الدین کے ٹویٹ پر سنتھیارچی نے معافی ...

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پیپلزپارٹی کے دیگر قائدین کے ساتھ امریکی خاتون بلاگر نے مخدوم شہاب الدین پر بھی شرمناک الزام لگایا لیکن اب خاتون کو معانگی مانگنا پڑگئی۔

ایوارڈ یافتہ صحافی ، ہم ٹی وی کے اینکر اور کالمسٹ مخدوم شہاب الدین نے کہا ہے کہ بدقسمتی سے ان کا نام سابق وزیر صحت سے ملتا جلتا ہے جس کی وجہ سے امریکی خاتون سنتھیارچی کی جانب سے لگائے گئے الزامات کے بعد لوگ مجھے پیغامات بھیج رہے ہیں اور مختلف پوسٹس میں ٹیگ کررہے ہیں۔

انہوں نے سوشل میڈیا ویب سائٹ ٹویٹر پر مزید کہا کہ وہ واضح کرنا چاہتے ہیں کہ مخدوم شہاب الدین سے سنتھیارچی کی مراد وہ نہیں ہیں۔

شہاب الدین نے لکھا "ویسے بھی دوہزار گیارہ میں میں نویں کلاس کا طالب علم تھا اور صرف چودہ سال کا تھا"۔

صحافی کے ٹویٹ پر امریکی خاتون نے بھی فوری ردعمل دیا اور واضح کیا کہ "یہ وہ مخدوم شہاب الدین نہیں ہیں جن کا میں نے ایف بی لائیومیں ذکر کیا۔ اس غلط فہمی پر میں آپ سے معذرت خواہ ہوں"۔

خیال رہے کہ امریکی خاتون نے سابق وزیرداخلہ رحمان ملک پر ریپ کرنے کا جبکہ سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی اور سابق وزیر صحت مخدوم شہاب الدین پر ہراساں کرنے کاالزام لگایاہے۔

انہوں نے کہا ان کے پاس تمام تفصیلات ہیں جو وہ مناسب اور غیر جانبدار صحافیوں کے سامنے رکھیں گی، انہوں نے واضح کیا کہ وہ اس بارے میں امارات میں موجود امریکی سفارتخانے اور کچھ قابل بھروسہ لوگوں کو بھی تفصیلات بتاچکی ہیں۔

انہوں نے ہر فورم پر پیش ہونے اور تمام تفصیلات فراہم کرنے کاابھی اعلان کیاہوا ہے۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -