کراچی حادثہ، بدقسمت طیارے کا لینڈنگ گیر اور انجن متاثرہ عمارت سے اتارنا امتحان بن گیا

کراچی حادثہ، بدقسمت طیارے کا لینڈنگ گیر اور انجن متاثرہ عمارت سے اتارنا ...
کراچی حادثہ، بدقسمت طیارے کا لینڈنگ گیر اور انجن متاثرہ عمارت سے اتارنا امتحان بن گیا

  

کراچی (این این آئی)کراچی میں حادثے کا شکار ہونیوالے پی آئی اے کے بدقسمت طیارے کا انجن اور لینڈنگ گیئر 15 روز گزرنے کے باوجود متاثرہ عمارت کی چھت سے اتارا نہ جا سکا۔ نجی ٹی وی کے مطابق حادثے کا شکار ہونیوالے طیارے کا انجن اورلینڈنگ گیئر بدستو ر متاثرہ عمارت کی چھت پر موجود ہے۔ذرائع کے مطابق پی آئی اے اور سول ایوی ایشن کی ٹیموں میں عمارت کی چھت سے انجن اور لینڈ نگ گیئر کو اتارنے کے معاملے پر اختلاف سامنے آ گئے ہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ گراو¿نڈ پلس ٹو عمارت کی چھت سے انجن اور لینڈنگ گیئر کو اتارنا ٹیموں کیلئے امتحان بن گیا ہے، اور طیارے کے پرزوں کو نکالنے کیلئے سرکاری اداروں کے پاس مطلوبہ آلات دستیاب نہیں۔ذرائع کے مطابق انجن کی دیگر ملبے کیساتھ منتقلی میں تاخیر طیارہ حادثے کی تحقیقات پر اثر انداز ہو سکتی ہے،اس کے علاوہ جائے حادثہ پر متاثرہ مکا نوں کی مرمت اور بحالی کا کام بھی التوا کا شکار ہے، ایس بی سی اے کی ٹیم کے دورے کے بعد ماہرین تعمیرات کی کسی ٹیم نے علاقے کادورہ نہیں کیا۔

دوسری جانب طیارہ جلنے کی وجہ سے علاقے میں موجود کاربن علاقہ مکینوں کیلئے وبال بن گیا اور گزشتہ روز آنیوالی آندھی کی وجہ سے گلی میں موجود کاربن دیگر گلیوں میں بھی پھیل گیا جس کی وجہ سے علاقہ مکینوں کے سانس میں تکلیف سمیت دیگر بیماریوں میں مبتلا ہونے کا خدشہ ہے۔یاد رہے 22 مئی کو لاہور سے کراچی آنیوالا پی آئی اے کا طیارہ کراچی کے علاقے ملیر جناح گارڈن میں لینڈنگ سے چند سیکنڈ قبل گر کر تباہ ہو گیا تھا جس میں عملے کے افراد سمیت 97 افراد جاں بحق جبکہ دو معجزانہ طور پر محفوظ رہے تھے۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -