نئی آٹو پالیسی کسٹمرز، مینوفیکچررز اور حکومت کیلئے مفید ہونا چاہیے،شوکت ترین 

  نئی آٹو پالیسی کسٹمرز، مینوفیکچررز اور حکومت کیلئے مفید ہونا چاہیے،شوکت ...

  

 اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا ہے اقتصادی ایڈوائزری کونسل کی ٹھوس سفارشات پر عملدرآمد سے مختلف شعبوں کی پیداوار کو بڑھایا جائیگا۔وزیر خزانہ کی زیر صدارت اقتصادی ایڈوائزری کونسل کا اجلاس ہوا،اجلاس میں زراعت صنعت توانائی اقتصادی امور کے وفاقی وزراء اور گورنر سٹیٹ بینک بھی شریک ہوئے،اجلاس میں چار سب گروپس نے زراعت، سی پیک، آئی ٹی اور سماجی شعبوں میں بہتری کیلئے اپنی سفارشات پیش کیں۔وزیر غذائی تحفظ سید فخر امام نے زرعی پیداوار میں اضافہ کیلئے منصوبہ بندی، چیئر مین سی پیک اتھارٹی جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ نے سی پیک کی پیشرفت اور سپیشل اکنامک زونز میں سرمایہ کاری کی حکمت عملی پر بریفنگ دی جبکہ معاون خصوصی ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے سماجی شعبے میں بہتری کیلئے احساس پروگرام کے نئے منصوبوں پر بریفنگ دی، آئی سیکٹر کی برآمدات بڑھانے کی حکمت عملی پر غور کیا گیا۔ وزیر خزانہ کا کہنا تھا اقتصادی ایڈوائزری کونسل کے قیام کا مقصد معاشی ترقی کو تیز کرنے کیلئے مشاورت کرنا ہے۔دریں اثنا مجوزہ آٹو پالیسی سے متعلق اعلیٰ سطحی اجلاس میں وزیر خزانہ شوکت ترین کو وزیر صنعت خسرو بختیار نے چنیدہ پہلوؤں سے آگاہ کیااور بتایاگیا نئی پالیسی سے ریونیو اضافہ، پارٹس کی پیداوار، درآمد پر انحصار کم ہوگا، موثر اقدامات سے اضافی پیداوار کی برآمد ممکن اور صارف کیلئے آ سا نی ہوگی،مارکیٹ میں نئے سرمایہ کاروں کی آمد اور دیگر امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیر خزانہ نے کہا نئی پالیسی صارف، مینوفیکچررز اور حکومت کیلئے مفید ہونی چاہیے، بجٹ میں شامل کرنے کیلئے تجاویز کو جلد حتمی شکل دی جائے۔

شوکت ترین 

مزید :

صفحہ اول -