نابلس میں فلسطینی مظاہرین پر اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ،20زخمی

نابلس میں فلسطینی مظاہرین پر اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ،20زخمی

  

 نابلس (این این آئی)قابض اسرائیلی فوج نے غرب اردن کے شمالی شہر نابلس میں نہتے فلسطینیوں پر طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا ہے جس کے نتیجے میں 20 فلسطینی شہری زخمی ہوگئے۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق اسرائیلی فوج نے جنوبی نابلس میں جبل صبیح کے مقام پر فلسطینی شہریوں پر گولیوں کی بوچھاڑ کی۔ہلال احمر فلسطین کے مطابق اسرائیلی فوج نے حملے میں 20 فلسطینی زخمی ہوئے ہیں۔ ان میں سے 18 فلسطینی براہ راست فائرنگ، 3 دھاتی گولیوں اور 2 لاٹھی چارج سے زخمی ہوئے۔نابلس میں ہلال  احمر کے ڈایریکٹر ایمرجنسی سروس احمد جبریل نے بتایا کہ اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے زخمی ہونے والے 10 فلسطینیوں کو فوری طبی امداد فراہم کی گئی۔ ان میں سے متعدد کی حالت تشویشناک ہے جنہیں اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔ نماز جمعہ کے بعد فلسطینیوں کی بڑی تعداد نے جبل صبیح میں یہودی آباد کاری کے خلاف ریلی نکالی گئی جس میں مقامی عوامی مزاحمتی کمیٹیوں کے کارکنوں نے بڑی تعداد شرکت کی۔ اس موقعے پر قابض فوج نے فلسطینیوں کو منتشر کرنے کے لیے ان کے خلاف طاقت کا اندھا دھند استعمال کیا جس کے نتیجے میں کم سے کم بیس فلسطینی شہید ہوگئے۔دوسری طرف مصر سے تعمیراتی مشینری، تعمیراتی سامان اور ماہرین تعمیرات کی ٹیموں پر مشتمل درجنوں افراد فلسطین کے جنگ زدہ علاقے غزہ کی پٹی پہنچے۔ مصر سے آنیوالے ماہرین اسرائیلی بمباری سے ہونے والی تباہی کے بعد ملبہ ہٹانے اور تعمیراتی کام شروع کریں گے۔میڈیارپورٹس کے مطابق مقامی فلسطینی ذرائع نے بتایا کہ مصرسے ماہرین اور تعمیراتی مشینری غزہ کی واحد بین الاقوامی گذرگارہ رفح سے غزہ لائی گئی۔ مصر کے اس اقدام کا مقصد جنگ زدہ فلسطینی علاقے میں ہونے والی تباہی کے بعد ملبہ ہٹانا اور تعمیر نو کا کام شروع کرنے میں مدد دینا ہے۔ مصر سے آنے والی مشینری تباہ ہونے والی عمارتوں کا ملبہ صاف کرے گی۔خیال رہے کہ 10 سے 21 مئی کے دوران اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی پر وحشیانہ بمباری کی جس کے نتیجے میں بڑے پیمانے پر عمارتیں تباہ ہوئی ہیں۔ مصر نے 18 مئی کو غزہ کی پٹی کی تعمیر نو کے لیے 50 کروڑ ڈالر کی رقم ادا کرنے کا اعلان کیا تھا۔

فلسطین

مزید :

صفحہ اول -