وزیراعظم نے رئیل اسٹیٹ اور ہاؤسنگ سیکٹر کو ڈوبنے سے بچالیا: چودھری سرور لنگڑیال 

وزیراعظم نے رئیل اسٹیٹ اور ہاؤسنگ سیکٹر کو ڈوبنے سے بچالیا: چودھری سرور ...

  

لاہور(انٹرویو،میاں اشفاق انجم، تصاویر، ایوب بشیر) وزیراعظم پاکستان نے رئیل اسٹیٹ اور ہاؤسنگ سیکٹر کو ڈوبنے سے بچایا ہے تعمیراتی پیکیج سے ہزاروں افراد کو روزگار ملا ہے اور 40صنعتوں میں کام چل رہا ہے۔ گھر بنانے کے لئے دی گئی سہولت میں توسیع کی ضرورت ہے۔ وفاقی اور صوبائی بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہ لگایا جائے۔ نیا پاکستان ہاؤسنگ سکیم 50لاکھ گھروں کی فراہمی کی طرف درست قدم ہے۔ ہاؤسنگ سکیم کی منظوری کے نظام میں ون دنڈو نظام کے ذریعے بہتری لائی جا سکتی ہے۔ عمران خان قوم کی آخری امید ہیں 33ماہ میں 15ماہ لاک ڈاؤن کے باوجود ملکی معیشت درست سمت جا رہی ہے ان خیالات کا اظہار آل پاکستان پرائیویٹ ہاؤسنگ سوسائٹی ایسوسی ایشن کے مرکزی چیئرمین اور چیف ایگزیکٹو اومیگا گروپ آف کمپنیز چودھری محمد سرور لنگڑیال نے روزنامہ پاکستان سے خصوصی گفتگو میں وفاقی بجٹ 2021ء کے حوالے سے تجاویز دیتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا گزشتہ حکومتوں نے رئیل اسٹیٹ سیکٹر پر توجہ نہیں دی اسحاق ڈار نے بلاوجہ کے ٹیکسز مسلط کرکے پوری صنعت کو تباہ کر دیا جس کی وجہ سے رئیل اسٹیٹ بلڈرز اور ڈویلپرز کا شعبہ بُری طرح متاثر ہوا تعمیراتی کام سے منسلک ساری صنعتیں بند ہو گئیں انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے تعمیراتی پیکیج سے انقلاب برپا ہوا حکومت کی طرف سے گزشتہ حکومت کی طرف سے مسلط کئے گئے ٹیکسز کی واپسی سے پوری صنعت پٹڑی پر چڑھ گئی چودھری سرور نے کہا امید کریں گے وزیراعظم آئندہ دو سال میں بھی ہاؤسنگ سیکٹر کی سرپرستی جاری رکھیں گے اور کوئی نیا ٹیکس نہیں لگائیں گے انہوں نے کہا ڈی سی ریٹس میں کمی ضروری ہے۔ ہاؤسنگ سیکٹر وزیراعظم کے 50لاکھ گھروں کی فراہمی میں کلیدی کردار ادا کر سکتا ہے۔ ٹیکس نظام کو دوستانہ بنانے اور نیب اور FBR کا خوف ختم کرنے کی ضرورت ہے۔ ہمارے اومیگا گروپ کے لاہور کے بعد فیصل آباد میں منصوبے کو بڑی پذیرائی ملی ہے۔

چودھری سرور لنگڑیال

مزید :

صفحہ آخر -