میمونہ ہاشمی کے اکاؤنٹ سے 52لاکھ روپے نکلوانے کا انکشاف 

میمونہ ہاشمی کے اکاؤنٹ سے 52لاکھ روپے نکلوانے کا انکشاف 

  

 ملتان (  نیوز رپورٹر  ) آمدن سے زائد اثاثے اور بنک ٹرانزیکشن پر مخدوم جاوید ہاشمی کا خاندان ایف بی آر کے ریڈار پر آ گیا، ایف بی آر نے مکمل قانونی کاروائی کرنے کے بعد جاوید ہاشمی کی بیٹی میمونہ ہاشمی کے اکاونٹ سے 52 لاکھ سے زائد رقم نکلوا لی  میمونہ ہاشمی کا کہنا ہے کہہ انکے اکاونٹ میں سے عدالتی حکم امتناعی کے باوجود پیسے نکلوائے گئے انہوں نے عدالت عالیہ میں توہین عدالت کی درخواست بھی دے رکھی تھی جبکہ چیف کمشنر ایف بی آر عابد رضا بودلہ کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ میمونہ ہاشمی کے بنک ٹرانزیکشن کروڑوں روپے میں تھی، میمونہ ہاشمی کے انکم ٹیکس گوشواروں اور بنک اکاونٹ میں واضح فرق تھا کئی مرتبہ نوٹس بھی جاری کئے گئے لیکن انہوں نے کوئی جواب نہ دیا کئی ماہ سے تحقیقات کا عمل جاری تھامیمونہ ہاشمی کی جانب سے کوئی جواب نہ آنے پر کاروائی کی گئی  سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی کی بیٹی کے بینک اکاونٹ سے ایف بی آر کی جانب سے جبری طور پر 52 لاکھ روپے نکالنے مخدوم جاوید ہاشمی کی بیٹی میمونہ ہاشمی نے سخت احتجاج کرتے ہوئے ایف بی آر کے عمل کو توہین عدالت قرار دیا ہے میمونہ ہاشمی کے مطابق 4 مئی کو لاہور ہائیکورٹ کے واضح احکامات کے باوجود 4 جون کو ان کے کے اکاونٹ میں سے عدالتی حکم امتناعی کے باوجود پیسے نکلوائے گئے انہوں نے کہا کہ یہ میرا ذاتی مسئلہ نہیں بلکہ پوری قوم کی توہین ہے میمونہ ہاشمی نے عدالت عالیہ میں توہین عدالت کی درخواست بھی دے رکھی تھی 4 جون کو ایف بی آر نے 52 لاکھ روپے رقم میمونہ ہاشمی کے اکاونٹ سے نکلوالی جبری طور پر رقم نکلوانے پر میمونہ ہاشمی کا شدید احتجاج کیا ہے۔

سرخ دائرہ

مزید :

صفحہ اول -