پنجاب کو سڑکیں بنانے کیلئے فنڈز دیے جا رہے ہیں، سندھ کیلئے کوئی نئی سکیم نہیں ، مراد علی شاہ 

پنجاب کو سڑکیں بنانے کیلئے فنڈز دیے جا رہے ہیں، سندھ کیلئے کوئی نئی سکیم نہیں ...
پنجاب کو سڑکیں بنانے کیلئے فنڈز دیے جا رہے ہیں، سندھ کیلئے کوئی نئی سکیم نہیں ، مراد علی شاہ 

  

کراچی ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ سندھ سے امتیازی سلوک کیا جا رہا ہے ، سندھ کیلئے وفاق نے ابھی کوئی نئی سکیم نہیں رکھی جبکہ  پنجاب کو سڑکیں بنانے کے فنڈز دیے جا رہے ہیں ۔ اس وقت وفاقی حکومت نے سندھ کیلئے صرف 6 سکیمیں رکھی ہیں ، گزشتہ حکومت میں سندھ کیلئے 127 سکیمیں تھیں، پنجاب ، بلوچستان اور خیبرپختونخوا ترقی کرے  ہمیں خوشی ہے ، لیکن سندھ کیساتھ ایسا سلوک کیوں کیا جا رہا ہے ۔ ہم نے وفاق کو خط لکھا ہے مگر مجھے علم ہے کہ میں بہرے لوگوں سے بات کر رہا ہوں ، ہمیں علم ہے کہ جعواب میں کہا جائے گا کہ گرین لائن بنا دی ہے ۔کل میٹنگ ہے صوبے کا موقف اس میں رکھوں گا، این ای سی کے اجلاس سال میں دو مرتبہ ہونے چاہئیں ۔

سید مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ پانی کے معاملے پر بھی سندھ کے ساتھ زیادتی ہو رہی ہے ، پانی کا معاملہ اسمبلی میں لے کر گیا ، تمام جماعتیں متفق تھیں کہ پانی پر زیادتی ہو رہی ہے ، وفاق کہتا ہے کہ ہم پانی دے رہے ہیں مگر پانی چوری ہو رہا ہے ، احتجاج کرنا سب کا جمہوری حق ہے ، ہم پر امن مظاہروں کے راہ میں رکاوٹ نہیں بنیں گے ۔

کورونا سے متعلق وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ صوبے میں کورونا کیسز کی شرح سب سے کم اور ریکوری کی شرح سب سے زیادہ ہے ، ویکسین کے بعد بھی ایس او پیز پر عملدرآمد کی ضرورت ہے ، میں نے کورونا ویکسین کی دونوں ڈوز لگا لی ہیں اس کے باوجود ماسک پہنتا ہوں، وباء موجود ہے اس کے باوجود ہمیں احتیاط جاری رکھنی ہے ، میں درخواست کروں گا کہ زیادہ سے زیادہ لوگ ویکسین لگوائیں ۔ 

سید مراد علی شاہ نے کہا کہ کورونا وباء کے خلاف عوام حکومت کی مدد کریں تا کہ جلد سے جلد بحالی کی جانب جا سکٰں اور پابندیاں ختم ہوں ، حکومت اپنی طرف سے پابندیاں اٹھانے کی طرف جانا چاہتی ہے ،ہم ایک دن میں ایک لاکھ سے زائد افراد کو کورونا ویکسین لگا رہے ہیں ، اگر سکول کھولنا ہے تو تمام اساتذہ کو ویکسین لگوانا ہوگی، اگر کوئی دوکاندار اپنی دکان کھولنا چاہتا ہے تو اسے ویکسی نیشن کرانا ہوگی ۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ عدالتوں کے ساتھ تجربات خوشگوار نہیں رہے ، بعض عدالتی فیصلوں پر تحفظات ہیں ۔

مزید :

قومی -علاقائی -سندھ -