انتظار کی گھڑیاں ختم،سرکاری ملازمین کی رہائشی سکیم میں پلاٹوں کے قبضے ملنا شروع

انتظار کی گھڑیاں ختم،سرکاری ملازمین کی رہائشی سکیم میں پلاٹوں کے قبضے ملنا ...
 انتظار کی گھڑیاں ختم،سرکاری ملازمین کی رہائشی سکیم میں پلاٹوں کے قبضے ملنا شروع

  


 طویل عرصے سے اپنے پلاٹوں کا قبضہ حاصل کرنے اور وہاں مکان تعمیر کرنے کے خواہشمند ہزاروں الاٹیوں اور مالکان کا انتظار ختم ہو گیا ہے اور انہیں غیر یقینی صورت حال سے نجات مل گئی ہے ۔لاہور ڈویلپمنٹ اتھار ٹی کے ڈائریکٹر جنرل احد خان چیمہ کی زیر نگرانی سرکاری ملازمین کی رہائشی سکیم ایل ڈی اے ایونیو ون کے مقدمہ بازی سے پاک رقبے پرسڑکوں کی تعمیر ‘ بجلی کی فراہمی اور واٹر سپلائی و سیوریج سمیت تمام ترقیاتی کام مکمل کر نے کے بعد ا س اراضی پر بنائے جانے والے نو ہزار سے زائد پلاٹوں کے الاٹیوں اور مالکان کو ان کے پلاٹوں کا قبضہ دینے کا کام جاری ہے ۔ ان پلاٹوں کی فہرست ایل ڈی اے کی ویب سائٹ www.lda.gop.pkپر دستیاب ہے ۔  مقدمہ بازی سے متاثرہ سکیم کے باقی30فیصد رقبے پر واقع تقریباً تین ہزار پلاٹوں کے متاثرین کو انتظار کی مزید کوفت سے بچانے کے لئے ڈائریکٹر جنرل ایل ڈی اے احد خاں چیمہ کی رہنمائی اور نگرانی میں ان کی ٹیم نے تقریبا ایک سال تک انتھک محنت کر کے سکیم کی ری پلاننگ کی اور 1599نئے پلاٹ تخلیق کئے جو دو مرحلوں میں کمپیوٹرائزڈ قرعہ اندازی کر کے متاثر ین کو الاٹ کردیئے گئے ہیں۔پہلے مرحلے میں سکیم کی ری پلاننگ سے متاثر ہونے والے 321الاٹیوں کو متبادل پلاٹ 24جنوری 2015ء کو الاٹ کئے گئے ۔دوسرے مرحلے میں مقدمہ بازی سے متاثرہ اراضی پر واقع 2894 پلاٹوں کے مالکان کو متبادل پلاٹوں کی الاٹمنٹ کے لئے قرعہ اندازی 4مارچ 2015ء کو پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے تعاون سے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کی موجودگی میں کی گئی اور دستیاب 1278 پلاٹ مالکان کو متبادل پلاٹ کے طور پر الاٹ کر دئیے گئے۔ان میں ایک کنال کے 680اور 10مرلے کے 598پلاٹ شامل ہیں ۔مقدمات کے فیصلے کے بعد باقی 1616متاثرین کو بھی پلاٹ د ینے کا انتظام کیا جا ئے گا۔ ایل ڈ ی اے ایونیو ون کے یہ پلاٹ ہر لحاظ سے ڈویلپڈ ہیں اور مالکان فوری طور پر ان کا قبضہ حاصل کر کے مکان تعمیر کر سکتے ہیں۔اپنے پلاٹ کا قبضہ حاصل کرنے کے خواہشمند ویب سائٹ سے اپنے پلاٹ کی تصدیق کریں اور ایل ڈی اے کے دفتر واقع 467-D-IIمین بلیوارڈ خیابان فردوسی محمد علی جوہر ٹاؤن لاہور میں قائم ون ونڈو سیل کی پہلی منزل پر ذاتی طور پر تشریف لا کر اپنے پلاٹ کا قبضہ حاصل کریں ۔اس سلسلے میں تمام کارروائی ایک ہی دن میں ایک ہی چھت تلے مکمل کی جارہی ہے۔ پلاٹ مالکان اپنی ذمہ داری کا احساس کرتے ہو ئے مقدمہ بازی یا تجاوزات سے بچنے کے لئے فوری طور پر اپنے پلاٹوں کا قبضہ حاصل کر لیں۔ قبضہ حاصل کرنے کے لئے ایل ڈی اے کی طرف سے قبضہ حاصل کرنے کی اطلاع دینے کا خط‘ قبضہ حاصل کرنے کے لئے پُر شدہ درخواست فارم جو ایل ڈی اے کی ویب سائٹ سے ڈاؤن لوڈ کیا جا سکتا ہے‘ قبضہ پراسیسنگ فیس /بقایا جات ‘ زائد رقبہ (اگر ہو تو اس کی قیمت)کے علیحدہ علیحدہ پے آرڈرز یا بینک ڈرافٹ بحق ڈائریکٹر جنرل ایل ڈی اے‘ اصل شناختی کارڈ اور اس کی دو کاپیاں اور اصل الاٹمنٹ لیٹر/ٹرانسفر لیٹر بمع دو فوٹو کاپیاں ہمراہ لائیں ۔اس سلسلے میں مزید معلومات کے لئے فون نمبر042-99262250اور 042-99262259 پر رابطہ کریں۔ لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی طرف سے ملک بھر کے سرکاری ملازمین کے لئے خصوصی طور پر پہلی رہائشی سکیم 2003ء میں شروع کی گئی ۔ رائیونڈ روڈ اور ملتان روڈ کے درمیان 18ہزار کنال رقبے پر محیط اس سکیم میں پلاٹوں کی الاٹمنٹ کے لئے 10983سرکاری ملازمین نے درخواستیں دیں جو سب کی سب منظور کر کے ملازمین کو پلاٹ الاٹ کر دئیے گئے ۔مجموعی طور پر 6 ہزار ملازمین نے دس مرلے اور5 ہزار ملازمین نے ایک کنال کے پلاٹوں کے لئے درخواستیں دیں۔ سکیم کے لئے حصول اراضی کے لئے ایل ڈی اے کی طرف سے تمام قانونی تقاضے پورے کرنے کے باوجود سکیم میں شامل ہونے والے تقریباً 30فیصد رقبے کے بارے میں سابقہ مالکان اراضی کی طرف سے قانونی چارہ جوئی کئے جانے کے باعث نہ صرف سکیم میں سڑکوں کی تعمیر ، واٹر سپلائی، سیوریج وغیرہ کے نظام اور بجلی کی فراہمی سمیت ترقیاتی کاموں کی تکمیل میں مشکلات پیش آئیں بلکہ چار ہزار سے زائد پلاٹوں کے لئے درکار اراضی کے حصول کا معاملہ طویل التواء کا شکار ہو گیا۔ اس عرصے کے دوران عدالتوں میں زیر سماعت مقدمات کی پیرو ی اورا ن کے جلد فیصلے کے لئے تمام ممکن کوششیں کی گئی اور ساتھ ہی ساتھ فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن کو سکیم میں ترقیاتی کام مکمل کرنے کی ذمہ داری بھی سونپ دی گئی، مگر مختلف مقامات پر حائل زمینی رکاوٹوں کے باعث نہ تو بروقت ترقیاتی کام مکمل کئے جا سکے اور نہ ہی ہزاروں الاٹیوں کو ان کے پلاٹوں کا قبضہ دیا جا سکا ۔ لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے ڈائریکٹر جنرل احد خان چیمہ نے ذمہ داریاں سنبھالنے کے بعد اس صورت حال کا ایک چیلنج کے طور پر سامنا کیا اور سکیم کے 70فیصد کلیئر رقبے پرترقیاتی کام مکمل کروانے،مختلف مقامات پر ناجائز قبضے اور تجاوزات ختم کروانے، عدالتوں میں زیر سماعت مقدمات کی مکمل تیاری کے ساتھ پیروی اور سکیم کا دوبارہ سروے کر کے متعدد خالی قطعات اراضی پر نئے پلاٹ بنانے کے لئے سرگرمی سے کام شروع کیا ۔ انہوں نے ایل ڈی اے کی گورننگ باڈی سے سکیم کی از سر نو پلاننگ کی منظور ی بھی حاصل کی اور مسلسل ایک سال کی دن رات محنت کے بعد 1599متبادل پلاٹ تیار کر وائے اور متاثرین کو متبادل پلاٹ کے طور پر الاٹ کر دئیے گئے ہیں ۔ان کا عز م اور کوشش ہے کہ مزید تاخیر کے بغیر اپنا گھر اور اپنی چھت تعمیر کرنے کے منتظر ہزاروں افراد کو اپنا اور اپنے اہل خانہ کا سر چھپانے کے لئے موزوں ٹھکانہ میسر آ سکے ۔ڈائریکٹر جنرل ایل ڈی اے احد خاں چیمہ کی طرف سے صبر و تحمل سے پلاٹوں کے قبضے کا انتظار کرنے پر متاثرین کا شکریہ ادا کیا گیا ہے۔

مزید : کالم