بھارت میں مشتعل افراد نے ریپ کے ملزم کو جیل سے نکال کر مار ڈالا

بھارت میں مشتعل افراد نے ریپ کے ملزم کو جیل سے نکال کر مار ڈالا
بھارت میں مشتعل افراد نے ریپ کے ملزم کو جیل سے نکال کر مار ڈالا

  


نئی دہلی (ویب ڈیسک) بھارتی ریاست ناگالینڈ میں مشتعل افراد نے ریپ کے ایک ملزم کو جیل سے نکال کر تشدد کرکے ماردیا اور نعش ٹاور سے لٹکا دی۔ بھارتی خبر ایجنسی ’پریس ٹرسٹ آف انڈیا‘ کے مطابق ناگا لینڈ کے تجارتی قصبے دیماپور میں لوگوں کے بڑے ہجوم نے 24 فروری کو ایک خاتون سے کئی بار زیادتی کے الزام میں گرفتار شخص کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیااور اس موقع پر طلبہ اور مشتعل افراد ملزم کو جیل سے نکالنے میں کامیاب ہوگئے۔ پولیس نے مظاہرین کومنتشر کرنے کے لیے فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں کم از کم 20افرادزخمی ہوگئے جس کے بعد مشتعل ہجوم نے پولیس کی گاڑیوں کو بھی آگ لگادی ۔

ایک بھارتی اخبار کے مطابق ہجوم جیل کے دو دروازے توڑ کر ریپ کے مشتبہ ملزم کو نکالنے کے بعدموٹرسائیکل سے باندھا اور برہنہ حالت میں اسے گھسیٹتے ہوئے ٹاﺅن کے مرکزی مقام کلاک ٹاور تک لے آیا جہاں اسے برہنہ کرکے مارا گیا اور پھر اس کی نعش کو بازار میں ٹاور کے ساتھ لٹکا دیا گیا۔

مبینہ مجرم کی شناخت استعمال شدہ گاڑیوں کا کاروبار کرنیوالے 35سالہ سید فرید خان کے نام سے شناخت ظاہر کی گئی ہے اور وہ بنیادی طورپر بنگلہ دیش کارہائشی تھا۔

 دیماپور کے پولیس سپرنٹنڈنٹ میرن جامیر نے بتایا کہ صورت حال انتہائی کشیدہ ہے، ہم امن و امان بحال کرنے کی ہر ممکن کوشش کر رہے ہیں۔

مزید : جرم و انصاف