دو جمالیوں کی لڑائی (ن) لیگ کو لے ڈوبی

دو جمالیوں کی لڑائی (ن) لیگ کو لے ڈوبی
دو جمالیوں کی لڑائی (ن) لیگ کو لے ڈوبی

  


اسلام آباد (ویب ڈیسک) بلوچستان سے ن لیگ کے عہدیداروں سردار یعقوب خان ناصر اور ونیش کمار کی شکست میں جہاں پیسہ چلا وہاں پر میر ظفر اللہ جمالی کی منت نے بھی کام دکھایا، سابق وزیراعظم میر ظفر اللہ جمالی نے وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات کرکے منت کے ساتھ اس خواہش کا اظہار کیا تھا کہ جان جمالی کی بیٹی ثنا جمالی کو ن لیگ کا ٹکٹ نہ دیا جائے۔مقامی اخبار دنیا نیوز کے مطابق وزیراعظم نواز شریف نے ظفر اللہ جمالی کی خواہش کا احترام کرتے ہوئے سپیکر جان جمالی جو اسلام آباد میں موجود تھے سے ملاقات نہیں کی جس پر جان جمالی مایوس اور ناراض ہوکر واپس کوئٹہ چلے گئے اور چنا جمالی کو آزاد حیثیت سے الیکشن لڑانے کا اعلان کردیا۔ مقامی اخبار روزنامہ دنیا کے مطابق جان جمالی نے آزاد گروپ بنالیا جس کے پاس 4 سے 6 ووٹ تھے، جان جمالی نے پیشکش کی تھی کہ اگر ن لیگ ان کی بیٹی کو ٹکٹ دےدے تو وہ سردار یعقوب ناصر اور اقلیتی امور ونیش کو ووٹ دے کر جتوا سکتے ہیں تاہم میر ظفر اللہ جمالی آڑے آگئے۔ وزیراعظم نواز شریف نے سابق وزیر اعظم سے کیا گیا وعدہ نبھاتے ہوئے ثنا جمالی کو ٹکٹ نہیں دیا اور جان جمالی کے ووٹوں سے پارٹی امیدواروں کو محروم کروایا، بلوچستان میں ن لیگ کے ساتھ اپ سیٹ میں جہاں پیسے نے کام دکھایا وہاں پر ظفر اللہ جمالی نے بھی کردار ادا کیا ہے، اگر جان جمالی کے ساتھ ایڈجسٹمنٹ کرلی جاتی ہے تو اس بات کا قوی امکان تھا کہ ثناءاللہ جمالی، سردار یعقوب ناصر اور ونیش کمار تینوں کامیاب ہوسکتے تھے، مجموعی طور پر ن لیگ 3 کے بجائے 5 سیٹیں جیت سکتی تھی۔

مزید : اسلام آباد