حکومت دینی مدارس بارے منفی پراپیگنڈہ بند کرے ‘قاری حنیف جالندھری

حکومت دینی مدارس بارے منفی پراپیگنڈہ بند کرے ‘قاری حنیف جالندھری

  

کبیروالا+اڈا کوٹ بہا در(نامہ نگار+نمائندہ پاکستان)حکومت کا بھارتی پائلٹ کو رہا کرنا بیرونی ممالک کے دباؤ کا نتیجہ تھا،خارجہ پالیسی پر نظر ثانی کرنی چاہیے،سی پیک منصوبہ پر ہم نے چین کو ناراض کر دیا،مسلم ممالک کے پلیٹ فارم او آئی سی پر انڈیا کو بلانا ہماری خارجہ پالیسی کی ناکامی ہے، تبدیلی صرف نعروں اور دعوؤں سے نہیں آیا کرتی،عملی اقداما ت اٹھائے بغیر تبدیلی کا خواب پورا نہیں ہوسکے گا،دینی مدارس کے تقدس کاہر صورت تحفظ کیا (بقیہ نمبر43صفحہ12پر )

جائیگا، ان خیالات کا اظہار وفاق المدارس عربیہ پاکستان کے ناظم اعلی آور اسلامی نظریاتی کونسل کے رکن قاری محمد حنیف جالندھری نے گزشتہ روز کبیر والا میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ دینی مدارس کے 30لاکھ طلبہ وقت آنے پر دشمن کے سامنے سیسہ پگھلای ہوئی دیوار بن جائیں گے مگر اپنے وطن عزیر پر کوئی آنچ نہ آنے دیں گے انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت کی مدارس کے بارے میں پالیسیاں بھی سابق حکومت ہی کی طرح ہیں مگر تمام تر پابندیوں اور رکاوٹیں کے باوجود دینی مدارس کے طلبہ کی تعداد میں پانچ لاکھ سالانہ اضافہ ہو رہا ہے اور کہا کہ حکومت دینی مدارس کے بارے میں منفی پروپیگنڈا بند کرے دینی مدارس امن اور خیر کے مراکز ہیں،انہوں نے کہا کہ سابق حکومت کے ترقیاتی کاموں میں رکاوٹیں ڈالنا حکومت کی گھٹیا سوچ ہے ان اقدامات سے عوام کے دلوں میں حکومت کے خلاف نفرت پیدا ہو گی، انہوں نے کہا کہ دینی مدارس کے تقدس کو ہر حال بھال رکھا جائیگا اور اسکے لئے کسی قر بانی سے گریز نہیں کیا جائیگا۔

حنیف جالندھری

مزید :

ملتان صفحہ آخر -