زکوٰۃ کمیٹیوں کی تشکیل نہ ہو سکی،4ارب کے فنڈ ضائع ہونے کا خدشہ

زکوٰۃ کمیٹیوں کی تشکیل نہ ہو سکی،4ارب کے فنڈ ضائع ہونے کا خدشہ

  

لاہور(جاوید اقبال)حکومت پنجاب صوبہ کے 31اضلاع میں زکوٰۃ کمیٹیاں تشکیل نہیں دے سکی اور نہ ہی ان کے چیئر مین نامزدکئے جا سکے ہیں جس کے باعث غرباء کیلئے مختص 4ارب روپے کے فنڈز تین ماہ بعد ضائع ہوجائیں گے۔بتایا گیا ہے کہ محکمہ زکوٰۃ حکومت پنجاب اورصوبائی زکوٰۃ کونسل رواں مالی سال کیلئے زکوٰۃ کے فنڈز کی تقسیم کیلئے تاحال 31اضلاع میں زکوٰۃ کمیٹیاں قائم نہیں کرسکا 2019ء کے مالی سال کے خاتمہ میں تین ماہ باقی ہیں 15جون کے بعد 4ارب روپے کے فنڈز وفاقی حکومت کو واپس کرنا پڑیں گے 8ماہ میں محکمہ زکوٰۃ اور صوابائی زکوٰۃ کونسل صرف 5اضلاع منڈی بہاؤالدین ،میانوالی،ڈیرہ غازی خان،مظفر گڑھ اور راجن پور میں ڈسٹرکٹ زکوٰۃ کمیٹیاں تشکیل دے چکا ہے ۔مگر ان 5اضلاع میں بھی یونین کونسل کی سطح پر کمیٹیاں تشکیل نہیں دی جا سکیں۔ اس حوالے سے محکمہ زکوٰۃ کے ڈپٹی سیکرٹری صفی اللہ گوندل سے بات کی تو انہوں نے بتایا کہ ہر ضلع میں زکوٰۃ کمیٹی کا قیام اور چیئرمین کی نامزدگی زکوٰۃ کونسل کرتی ہے یا اس کا اختیار وزیر اعلیٰ پنجاب کو ہوتا ہے ہم نے فنڈز جاری کردیئے ہیں جو ہر ضلع کی زکوٰۃ کونسل کے پاس محفوظ ہیں جتنی دیر کمیٹیوں کا قیام عمل میں نہیں آتا یہ فنڈز خرچ نہیں کئے جاسکتے اگر آئندہ دو ماہ تک کمیٹیاں کی تشکیل نہیں ہوتی تو یہ فنڈز وفاق کے پاس واپس چلے جائیں گے مجھے افسوس ہے کہ ہم لوگ مفت کی تنخواہیں لے رہے ہیں اور جن لوگوں کی مدد کیلئے ہمیں رکھا گیا ہے ان کی امداد کیلئے ہم کچھ نہیں کرپا رہے انہوں نے کہا کہ جہاں تک میرے چارج نہ چھوڑنے کا تعلق ہے تو سیکرٹری زکوٰۃ عاصم اقبال مجھے ریلیو نہیں کررہے انہوں نے حکومت پنجاب کو سمری بھجوائی ہے کہ میرا تبادلہ منسوخ کردیا جائے۔

زکوٰۃ

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -