مجلس احرار کے زیر اہتمام شہدائے تحفظ ختم نبوت کانفرنس

مجلس احرار کے زیر اہتمام شہدائے تحفظ ختم نبوت کانفرنس

  

لاہور(سٹی رپورٹر) مجلس احرار اسلام پاکستان کے زیر اہتمام مارچ1953ء کی تحریک مقدس تحفظ ختم نبوت کے دس ہزار شہداء کی یاد میں سالانہ شہدائے تحفظ ختم نبوت کانفرنس مرکز احرار نیو مسلم ٹاؤن لاہور میں جامعہ اشرفیہ کے مہتمم مولانا فضل الرحیم اشرفی کی صدارت میں منعقد ہوئی ،جس سے خطاب کرتے ہوئے علماء کرام اور دینی و مذہبی سکالر علامہ زاہد الراشدی ،سید محمد کفیل بخاری،ناظم وفاق المدارس عربیہ مولانا عزیز الرحمن،سیکرٹری جنرل مجلس احرار اسلام پاکستان عبدالطیف خالد چیمہ،سید عطاء اللہ شاہ بخاری ثالث،مولانا عبدالشکور حقانی، قاری علیم الدین شاکر، مولانا عبیداللہ، مولانا فدا الرحمن، مولانا محمد سرفراز معاویہ و دیگر علماء نے 53ء کی تحریک ختم نبوت کے ہزاروں شہدا کو زبردست خراج تحسین پیش کیا۔

اور کہا کہ 53ء کی تحریک مقدس ختم نبوت ہماری ملکی تاریخ کی سب سے بڑی دینی تحریک ہے جس میں دس ہزار شمع رسالت کے پروانوں کو شہید کیا گیا۔ 20ہزار علماء مشائخ کو قید بند کی صعوبتیں برداشت کرنا پڑیں۔ مجموعی طور پر دو لاکھ فرزندان اسلام کو پابند سلاسل کیا گیا مولانا سید ابوالاعلیٰ مودودی، مولانا عبدالستار نیازی سمیت مقتدر علماء کو پھانسیوں کی سزائیں سنائی گئیں اگرچہ عوامی دباؤ پر عمل نہ ہوسکا۔ بظاہر اس مقدس تحریک ختم نبوت کو ریاست جبر سے کچل دیاگیا اور اس تحریک کے عظیم رہبر امیر شریعت سید عطاء اللہ شاہ بخاری نے یہ تاریخی الفاظ کہے کہ غیور مسلمانوں ختم نبوت کے تحفظ کے لئے مسلمانوں کی یہ قیدالمثال قربانی ہرگز رائیگاں نہیں جائیں گی۔ کانفرنس میں میاں محمد اویس، علامہ ممتاز اعوان، مولانا یوسف احرار، میاں محمد عفان، قاری ضیاء اللہ ہاشمی، مولانا تنویر الحسن احرار، ڈاکٹر عمر فاروق احرار، حاجی عبدالکریم قمر، قاری محمد قاسم بلوچ، ڈاکٹر ضیاء الحق قمر ودیگر رہنماؤں نے بھی شرکت کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -