6ماہ بعد بھی پٹوارسرکل رکھ کمبا کا ریکارڈ ، تفصیلی رپورٹ مرتب نہ ہوسکی

6ماہ بعد بھی پٹوارسرکل رکھ کمبا کا ریکارڈ ، تفصیلی رپورٹ مرتب نہ ہوسکی

  

لاہور( اپنے نمائندے سے) اسسٹنٹ کمشنر رائے ونڈ نے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر لاہور کے احکامات ہوا میں اڑا دیے اسسٹنٹ کمشنر رائے ونڈ کو رکھ کمبا سرکل کی بابت منگوایا جانے والا ریکارد تاحال تاخیر کا شکار کر دیا. ریونیو سٹاف کی جانب سے کی جانے والی مشکوک انٹریاں اور ریکارڈ میں پائی جانے والی خامیاں بھی چھپا لی گئی. چھ ماہ کا عرصہ گزر جانے کے بعد بھی تاحال پٹوار سرکل رکھ کمبا کا ریکارڈ اور تفصیلی رپورٹ مرتب نہ کی جاسکی. روزنامہ پاکستان کو ملنے والی دستاویزات کے سابق ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو اویس ملک نے اسسٹنٹ کمشنر رائے ونڈ شاہد محبوب کو چھ ماہ قبل تحریری احکامات جاری کیے اور پٹوارسرکل رکھ کمبا کے حوالے سے تفصیلی ریکارڈ طلب کیا. تحریری احکامات کے مطابق ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو اویس ملک نے لینڈ ریکارڈ ایکٹ کے تحت میں زراعت کے لیے تقسیم کی گئی. جائیداد کا ریکارڈ طلب کر رکھا تھا. اس کے علاوہ 1970 میں 25 سال کے لیے زراعت کے لیے تقسیم کی جانے والی زرعی زمین پر رہائشی مکانات ، کمرشل پلازے اور ہاؤسنگ سکیمیں بھی بنائی جا چکی ہیں. جبکہ اس ضمن میں وزیراعظم پاکستان عمران خان نے گزشتہ روز سختی سے نوٹس لیتے ہوئے زرعی اراضی پر ہاؤسنگ سکیم اور کمرشل کاروبار پر پابندی عائد کر دی ہے جبکہ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو اویس ملک نے بھی چھ ماہ قبل ہی پریکٹس کی روک تھام اور سخت الیکشن کیلئے اسسٹنٹ کمشنر رائے ونڈ شاہد محبوب کو تحریری طور پر ہدایات کی تھی جو کہ نظر انداز کردی گئی بلکہ چھ ماہ کا عرصہ گزر جانے کے بعد بھی اس حوالے سے رپورٹ مرتب نہ کی جاسکی. ذرائع کا کہنا ہے کہ رپورٹ کرنے کی صورت میں لیند مافیا کے خلاف قانونی کاروائی کی جانے تھی اور زرعی اراضی پر کمرشل تعمیرات کی روک تھام کیلیے پابندی لگائی جائے تھی . ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو اویس ملک کا کہنا تھا کہ اس رپورٹ کی تاخیر کی بابت نوٹس لیا جائے گا. دوسری جانب اسسٹنٹ کمشنر رائے ونڈ آفس کا کہناہے کہ اس تاخیر کا ذمہ دار رکھ کمبا کا ریونیو سٹاف ہے۔

پٹوارسرکل

مزید :

صفحہ آخر -