سپیکر قومی اسمبلی سے ازبکستان کے سفیر کی ملاقات‘باہمی تعلقات پر تبادلہ خیال

سپیکر قومی اسمبلی سے ازبکستان کے سفیر کی ملاقات‘باہمی تعلقات پر تبادلہ خیال

  

اسلام آباد(آن لائن)سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ مسلم امہ سے تعلقات کا فروغ پاکستان کی خارجی پالیسی کا بنیادی جزو ہے۔ منگل کو پاکستان میں تعینات ازبکستان کے سیفر فرقت صدیقوف نے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے ملاقات کی ،جس میں پاک ازبکستان تعلقات ،خطے کی موجودہ صورتحال اور باہمی دلچسپی کے دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔اس موقع پر اسد قیصر کا کہنا تھا کہ وسط ایشیا کی ریاستوں کیساتھ صدیوں پر محیط مذہبی، تجارتی، ثقافتی اور نسلی تعلقات پر ناز ہے،پاکستان اور ازبکستان کے مابین دوستانہ اور برادرانہ تعلقات موجود ہیں اور پاکستان دوطرفہ تعاون کو فروغ دے کر موجودہ تعلقات کو مزید فروغ دینا چاہتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ازبکستان تدوین حدیث کے جید عالم امام بخاری کی سرزمین ہے اور اہل پاکستان کے لییمتبرک ہے،مسلم امہ سے تعلقات کا فروغ پاکستان کی خارجی پالیسی کا بنیادی جزو ہے، پاکستان امن کا داعی ہے اور خطے میں تعاون و ترقی کے لیئے کوشاں ہے۔سپیکر قومی اسمبلی نے کہا کہ ہندوستان کی حالیہ مہم جوئی کے باوجود پاکستان نے ضبط و تحمل کا مظاہرہ کیا ہے، بھارتی پائلٹ کی رھائی پاکستان کی امن پسندی کی دلیل ہے۔ازبکستان کے سفیر نے کہا کہ ازبکستان پاکستان کے عالمی اور خطے کے امن کے لیے کیے گئے اقدامات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے،خطے میں ترقی اور تجارت کے فروغ کے لیے افغانستان میں امن بنیادی شرط ہے، پاکستان اور ازبکستان میں باہمی تجارت اور تعاون کے وسیع مواقع موجود ہیں لیکن افغانستان کے راستے مسدود ہونے کے باعث ہم تمام خطے کی خوشحالی سے محروم ہیں۔سفیر فرقت صدیقوف نے ملاقات کے دوران اسپیکر اسد قیصر کو ازبکستان کے دورے کی دعوت بھی دی ۔

اسد قیصر

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -