کرپٹ لوگ ملک لوٹ کر کھا گئے کوئی ان پر ہاتھ نہیں ڈالتا،نیب سے اللہ ہی پوچھے گا،جسٹس گلزاراحمد

کرپٹ لوگ ملک لوٹ کر کھا گئے کوئی ان پر ہاتھ نہیں ڈالتا،نیب سے اللہ ہی پوچھے ...
کرپٹ لوگ ملک لوٹ کر کھا گئے کوئی ان پر ہاتھ نہیں ڈالتا،نیب سے اللہ ہی پوچھے گا،جسٹس گلزاراحمد

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے این آئی سی ایل کرپشن کیس میں آئندہ سماعت پرملزم محسن حبیب اور نیب پراسیکیوٹرجنرل کو طلب کر لیا۔جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیئے کہ کرپٹ لوگ ملک لوٹ کرکھاگئے کوئی ان پرہاتھ نہیں ڈالتا،نیب سے اللہ ہی پوچھے گا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان میں این آئی سی ایل کرپشن کیس کی سماعت ہوئی،جسٹس گلزاراحمد کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے سماعت کی ۔

جسٹس گلزار احمد نے استفسار کیا کہ محسن حبیب کوگرفتارکیوں نہیں کیاگیا؟اتنابڑاکیس ہے اورمحسن حبیب آرام سے گھوم رہاہے،پراسیکیوٹر نے کہا کہ محسن حبیب کونیب نے طلب کیاتھا۔

وکیل نے کہا کہ محسن حبیب لاہورمیں ہے،پراسیکیوٹر نے کہا کہ سپریم کورٹ کاحکم تھامحسن حبیب کوگرفتارنہ کیاجائے۔جسٹس اعجاز الاحسن نے کہاکہ سپریم کورٹ کاحکم صرف 2 دن کیلئے تھا،نیب کوکیاپریشانی ہے،نیب کرکیارہاہے؟۔

جسٹس گلزاراحمد نے کہا کہ نیب کی ہرچیزمیں گڑبڑہے،نیب کاآنگن ہی ٹیڑھا،بااثرافرادپرہاتھ ڈالنے سے ڈرتے ہیں،جسٹس گلزاراحمد نے کہا کہ کرپٹ لوگ ملک لوٹ کرکھاگئے کوئی ان پرہاتھ نہیں ڈالتا،نیب سے اللہ ہی پوچھے گا۔

جسٹس گلزار احمد نے استفسار کیاکہ کیاکوئی ادارہ نہیں جونیب کاآڈٹ کرے؟عدالت نے کہا کہ آئندہ سماعت پرنیب پراسیکیوٹرجنرل اورمحسن حبیب پیش ہوں،عدالت نے این آئی سی ایل کرپشن کیس کی سماعت آئندہ ہفتے تک ملتوی کردی۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -