ایمرجنسی سروسزہیڈ کوارٹرز میں ڈویژنل ایمرجنسی آفیسرز کانفرنس 

  ایمرجنسی سروسزہیڈ کوارٹرز میں ڈویژنل ایمرجنسی آفیسرز کانفرنس 

  

 لاہور(کر ائم رپو رٹر)ایمرجنسی سروسزہیڈ کوارٹرز میں ڈویژنل ایمرجنسی آفیسرز کانفرنس کا انعقاد ہوا جس میں ڈائریکٹر جنرل پنجاب ایمرجنسی ڈیپارٹمنٹ ڈاکٹر رضوان نصیر نے میں تمام ضلعی ایمرجنسی افسران کی کارکردگی کا جائزہ لیا  انہوں نے اے ڈی پی  2022-23 کی سکیموں اور پیشنٹ ٹرانسفر سروس کی گائیڈلائینز کا بھی جائزہ لیا تاکہ پنجاب کے تمام اضلاع میں ایمرجنسی سروس کے یکساں معیار کو برقرار رکھا جا سکے۔ کانفرنس میں 9 ڈویژنل ایمرجنسی افسران اور محکمہ کے تمام شعبہ جات کے سربراہان نے شرکت کی۔لاہور، راولپنڈی، ملتان، فیصل آباد، گوجرانوالہ، سرگودھا، بہاولپور، ڈی جی خان اور ساہیوال کے ڈویژنل ایمرجنسی افسران نے بریفنگ دی کہ انہوں نے اپنے اپنے ڈویژن کی تحصیلوں اورریسکیو سٹیشنوں کے سرپرائز مانیٹرنگ دورے کئے اورریسکیورزکی کارکردگی اور نظم و ضبط کا جائزہ لیا۔سٹاف، ریسکیو سٹیشن، گاڑیوں اور آلات کا معائنہ کرتے ہوئے گریڈ اے بی سی اورڈی میں درجہ بندی کی ڈائریکٹرجنرل پنجاب ایمرجنسی ڈیپارٹمنٹ نے ڈویژنل ایمرجنسی افسران سے بہترین اور کمزور کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے عملے اور اضلاع کے بارے میں تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔

 انہوں نے کہا کہ جب پنجاب کے تمام اضلاع میں یکساں وسائل فراہم کیے گئے ہیں تو پھر کسی بھی ضلع میں سروس کے معیار میں بھی کوئی فرق نہیں ہونا چاہیے۔ اسلئے اگر اضلاع کے درمیان کوئی فرق ہے تو وہ صرف ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر کی انتظامی صلاحیت کی وجہ سے ہے۔ تمام ڈسٹرکٹ ایمرجنسی افسران کو چاہیے کہ وہ اپنے اضلاع میں ایمرجنسی سروسز کے معیار کو یقینی بنانے کیلئے باقاعدگی سے مشقیں، گاڑیوں کی بروقت مرمت و دیکھ بھال کے ساتھ ڈسٹرکٹ ایمرجنسی کنٹرول روم کے مؤثر کام کو یقینی بنائیں۔کانفرنس کی صدارت کرتے ہوئے ڈائریکٹرجنرل پنجاب ایمرجنسی ڈیپارٹمنٹ ڈاکٹر رضوان نصیر نے کہا کہ ہر ادارے کی کامیابی کیلئے کارکردگی کا جائزہ لازمی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اداروں کو وقتاً فوقتاً کارکردگی اورسٹاف کا جائزہ لیناچاہیے تاکہ ادارے اور سٹاف کی پرفارمنس اور کمیوں کا پتہ چل سکے۔مانیٹرنگ اور کارکردگی کا جائزہ لینے سے ادارے کے معاملات کو مزید بہترکرنے میں مدد ملتی ہے۔آپ سب کیلئے ضروری ہے کہ اپنی اپنی ڈویژن میں بہترین اور کم کارکردگی والے ریسکیورز کی نشاندہی کریں تاکہ کارکردگی کو مزید بہتربنایا جاسکیاور اس بات کو جانچا جاسکے کہ کچھ ریسکیورز کی کارکردگی میں کمی کیوں ہے اسکے ساتھ ساتھ یہ ضروری ہے کہ بہترین کارکردگی کے حامل سٹاف کی حوصلہ افزائی کی جائے اور کم کارکردگی کے حامل ریسکیورز کو انفرادی توجہ اور کاؤنسلنگ سے بہتر کیا جائے،تاکہ ایمرجنسی سروس کے یکساں معیار کو برقرار رکھا جاسکے۔ڈاکٹر رضوان نصیر نے ڈویژنل ایمرجنسی افسران کو ہدایت کی کہ بہترین کارکردگی کے حامل ضلعی ایمرجنسی افسر کو سراہا جائے بلکہ انکے تجربات اور مثالی کاموں کو سامنے رکھتے ہوئے دوسرے اضلاع کوبھی سیکھنے کا موقع فراہم کیا جائے تاکہ تمام شہریوں کوبروقت اور یکساں ومعیاری سروسزکی فراہمی ممکن ہوسکے۔

مزید :

علاقائی -