گندم کی امدادی قیمت 2200روپے فی من کرنے کی منظوری

گندم کی امدادی قیمت 2200روپے فی من کرنے کی منظوری

  

      لاہور (لیڈی رپورٹر)گندم کی قیمت میں اڑھائی سو روپے کا اضافہ،وزیراعلیٰ پنجاب نے گندم کی امدادی قیمت 2200 روپے فی من کرنے کی منظوری دیدی،حتمی منظوری وزیراعظم عمران خان دیں گے۔گندم کی قیمت بڑھنے سے آٹا مزید مہنگا ہونے کا امکان ہے۔ گندم 22سو روپے من کرنے کی منظوری وزیر اعلیٰ پنجاب نے دے دی۔ سمری منظوری کیلئے وزیر اعظم کو ارسال کر دی گئی۔ رواں برس گندم کی امدادی قیمت1950روپے ہے۔نئی گندم کی فصل کی امدادی قیمت2200روپے من کرنے کی سمری منظور کر لی گئی۔گندم کی امدادی قیمت میں اضافہ سے آٹا کی قیمت میں بھی اضافہ ہوگا۔گندم کی قیمت میں اضافہ سے آٹا کی قیمت دس روپے کلو بڑھ جائے گی۔ 10روپے اضافے سے آٹا کی قیمت فی کلو 64روپے ہو گی۔یاد رہے کہ 2021میں گندم کی فی امدادی من قیمتوں میں 4 سو روپے اضافہ ہوا۔ پہلی بار گندم کی قیمتوں میں 1350روپے سے 1450کی گئی۔ سو روپے ٹرانسپورٹیشن چارجز بڑھائے گئے، یکے بعد دیگرے 1450 سے بڑھا کر 1950روپے ہوئی۔عام مارکیٹ میں آٹا فی کلو 55روپے میں فروخت ہو رہا ہے۔دس کلوآٹے کا تھیلا 550روپے،جبکہ 20کلوآٹے کا تھیلا 1100روپے میں فروخت ہو رہا ہے۔ نئی گندم کی امدادی قیمت کی منظوری کے بعد آٹے کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ ہو گا۔

 گندم امدادی قیمت

مزید :

صفحہ اول -