پشاور دھماکہ،خود کش حملہ آور،سہولت کاروں کی شناخت مکمل،2مشتبہ افراد گرفتار

پشاور دھماکہ،خود کش حملہ آور،سہولت کاروں کی شناخت مکمل،2مشتبہ افراد گرفتار

  

     پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) صوبائی دارالحکومت پشاور میں جامع مسجد کوچہ رسالدار میں خودکش دھماکے کے دوسرے روز بھی فضا سوگوار رہی،تھانہ خان رزاق کے ایس ایچ او وارث خان کی مدعیت میں تھانہ سی ٹی ڈی میں درج کرلیا گیا۔تفصیلات کے مطابق دھماکے میں شہیدا کی نماز جناز و تدفین بھی شروع کر دی گئی۔دھماکے کے مزید 5 زخمی دوران علاج انتقال کر گئے۔ شہداء افراد کی تعداد 62 ہوگئی۔ترجمان لیڈی ریڈنگ اسپتال کے مطابق دھماکے کے 37 زخمی زیر علاج ہیں، زیر علاج زخمیوں میں سے 5 کی حالت تشویشناک ہے،پولیس ذرائع کے مطابق خود کش حملہ آور اور دو سہولت کاروں کے اسکیچز مکمل کر لیے گئے جبکہ دو مشتبہ افراد کو حراست میں لیا گیا۔ تفتیشی ٹیم کے مطابق جائے وقوعہ سے ملنے والے اعضا ء کا ٹیسٹ کیا جائے گا۔ خیبر پختونخوا حکومت کے ترجمان بیرسٹر محمد علی سیف نے کہا ہے کہ مساجد اور امام بارگاہوں کی سیکیورٹی بہتر بنانے کے اقدامات کر رہے ہیں۔خودکش بمبار کو لانے والے سہولت کاروں کی شناخت کی گئی اور کچھ لوگوں کو حراست میں لیا گیا، اصل نیٹ ورک کو ہم 48 گھنٹوں میں میڈیا کے سامنے پیش کریں گے۔تمام انٹیلی جنس ادارے مل کر کام کر رہے ہیں، کئی واقعات کو انٹیلی جنس ادارے ناکام بھی بناتے ہیں جو منظرعام پر نہیں آتے، ہم کسی پر بھی انگلی نہیں اٹھاتے، سب ہی کام کر رہے ہیں، نجی ٹی وی کے مطابق وزیر اعلی محمود خان، گورنر شاہ فرمان اور کور کمانڈر جنرل فیض حمید کی کوچہ رسالدار آمد، امام بارگاہ خونزادہ میں شہدا کے لواحقین سے اظہار ہمدردی کیا، بیرسٹر سیف کے آئی جی اور صوبائی کابینہ اراکین بھی ہمراہ تھے۔کورکمانڈر، گورنر اور وزیر اعلی نے دھماکے کے شہدا کے لواحقین سے اظہارِ تعزیت کیا، بیرسٹر محمد علی سیف نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلی،گورنر، کور کمانڈر نے لواحقین کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا، لواحقین اور علما کے ساتھ تفصیلی بات ہوئی۔ان کا کہنا تھا کہ کچھ لوگوں کو گرفتار کیا ہے، جن لوگوں نے دہشتگردوں کو سہولت دی ان تک بھی پہنچ گئے، لواحقین نے کہا کہ یہ ہم سب کی مشترکہ جنگ ہے۔بیرسٹر سیف نے کہا کہ لواحقین نے کہا ہے کہ یہ ہم سب کی مشترکہ جنگ ہے، لواحقین نے سیکیورٹی نظام مزید بہتر بنانے کا مطالبہ کیا، مساجد اور امام بارگاہوں کی سیکیورٹی بہتر بنانے کے اقدامات کر رہے ہیں۔ دریں اثناء  اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹیرس نے پشاور میں دہشتگردانہ حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ پشاور کو اچھی طرح جانتا ہوں، وہاں کے لوگوں کے بہترین سلوک سے آگاہ ہوں۔ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹیرس نے اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب سفیر منیر اکرم کو ٹیلی فون کر کے پشاور میں ہونیوالے دہشت گردانہ حملے اور معصوم جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔سیکرٹری جنرل نے واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ ان کیلئے ذاتی طور پر صدمہ کا باعث ہے کیونکہ وہ پشاور کو اچھی طرح جانتے ہیں اور وہاں کے لوگوں کے بہترین سلوک سے آگاہ ہیں۔انہوں نے مستقل مندوب سے کہا کہ ان کا پیغام اور اظہار تعزیت پاکستان کی عوام، حکومت اور قیادت تک پہنچائیں۔اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب سفیر منیر اکرم نے پاکستان کے ساتھ تعزیت اور اظہار یکجہتی پر سیکرٹری جنرل کا شکریہ ادا کیا۔قبل ازیں اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتریس نے پشاور دھماکے کو خوفناک قرار دیتے ہوئے اس کی شدید مذمت کی ہے اور واقعے میں ملوث ملزمان کو انصاف کے کٹہرے میں لانے کا مطالبہ کیا ہے۔ایک ٹوئٹ میں انتونیو گوتریس نے کہا کہ عبادت گاہیں، عبادت کیلیے ہوتی ہیں کسی کو نشانہ بنانے کے لیے نہیں ہوتی۔انہوں نے پشاور واقعے میں جاں بحق ہونے والوں کے اہل خانہ سے بھی تعزیت کی اور زخمیوں کی جلد صحتیابی کی دعا بھی کی۔

اقوام متحدہ 

پشاور دھماکہ 

مزید :

صفحہ اول -