پیکا آرڈیننس آگے چل سکتا ہے اور نہ ہی رہ سکتا:صدر لاہور ہائیکورٹ

پیکا آرڈیننس آگے چل سکتا ہے اور نہ ہی رہ سکتا:صدر لاہور ہائیکورٹ

  

      ننکانہ صاحب (نمائندہ خصوصی)صدر لاہور ہائیکورٹ بار سردار اکبر علی ڈوگر نے کہا ہے کہ ہم پیکا آرڈیننس کے با لکل خلاف ہیں پیکا آرڈیننس کے خلاف پٹیشن دائر کی ہوئی ہے جبکہ آزادی اظہار رائے ہر شہری کا بنیادی حق ہے زبان بندی اور بنیادی حقوق کو سلب کرنیوالے اس قانون کی بھرپور مذمت کرتے ہیں، پیکا آرڈیننس نہ آگے چل سکتا ہے اور نہ ہی رہ سکتا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ بار روم ننکا نہ صاحب میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ میں اور میرے ساتھی وکلاء کی فلاح و بہبود اورحقوق کیلئے پوری کوشش کرں گے اور قانون کی بالادستی و حکمرانی کیلئے کوئی کسر نہ اٹھا رکھیں گے انہوں نے کہا کہ جانشینی سرٹیفکیٹ جاری کرنے کے اختیار نادرا سے سول عدالتوں کو واپس دلائیں جائیں تاکہ لوگوں کو جانشینی سرٹیفکیٹ کے حصول میں مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ قبل ازیں نومنتخب صدر لاہور ہائیکورٹ بار سردار اکبر علی ڈوگر،جنرل سیکرٹری رائے عثمان احمد، نائب صدر چوہدری سہیل شفیق، اور فنانس سیکرٹری رانا علی اختر خاں کی منتخب ہونے کے بعد پہلی بار اور سب سے پہلے ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن ننکانہ صاحب پہنچے تو اس موقع پر ممبر پنجاب بار کونسل چوہدری انور زاہد سرا،صدر ننکانہ بار رانا محمد اعظم خاں،جنرل سیکرٹری علی احمد نول اور دیگر وکلاء نیا نکا پرتپاک استقبال کیا اور انہیں پھولوں کے ہار پہنائے۔ صدر لاہور ہائیکورٹ بار سردار اکبر علی ڈوگر او ر دیگر مہمانوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ننکانہ بارسے ہمارا فیملی تعلق ہے جس کی محبتوں کی وجہ سے ہم کامیاب ہوئے ہیں انہوں نے کہا کہ ننکانہ بار کی مہربانی کے ہمیشہ مقروض و ممنون رہیں گے اور انشاء اللہ ننکانہ صاحب بار کے تمام درینہ مسائل کے لئے کوشاں رہیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم کالے کوٹ کی تعظیم وتکریم پر ہمیشہ کام کرتے رہیں گے اور جج صاحبان کے تحریری حکم نامے کی بجائے زبانی اور نادر شاہی حکم پر عمل نہیں کریں گیا۔

صدر ہائیکورٹ

مزید :

صفحہ آخر -