ہر اس شخص کا شکار کروں گا جس نے پاکستان کو تباہی کے کنارے پر کھڑا کر دیا: عمران خان

ہر اس شخص کا شکار کروں گا جس نے پاکستان کو تباہی کے کنارے پر کھڑا کر دیا: ...
 ہر اس شخص کا شکار کروں گا جس نے پاکستان کو تباہی کے کنارے پر کھڑا کر دیا: عمران خان

  



سیالکوٹ,قصور (مانیٹرنگ ڈیسک) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستانی قوم کو اللہ نے شعو ر دے دیا ہے اور یہ قوم فیصلہ کر چکی ہے، گیارہ مئی کی رات کو نئے پاکستان کا جشن منائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان واقعی شیر کا شکاری ہے، یہ شکاری ہر اس شخص کا شکار کرے گا جس نے پاکستان کو تباہی کے کنارے پر کھڑا کر دیا ہے۔ قصور میں انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آصف زرداری تمہاری باری ختم ہو گئی ہے اور تمہارا قریبی دوست نواز شریف جس نے تمہیں سہارا دیا اس کی باری بھی ختم ہو گئی ہے۔ میاں نواز شریف کہتے ہیں میں بھی کرکٹ کھیلتا تھا، میاں صاحب جیسی آپ کرکٹ کھیلتے تھے ویسی ہی آپ نے پاکستان میں حکومت کی ہے، پانچ دفعہ باریاں لے لیں، پنجاب کی پانچ بار حکمرانی کی، میاں صاحب چھٹی بار منتخب ہو کر کیا کریں گے جو آپ پانچ دفعہ نہیں کر سکے۔ میاں صاحب کہتے ہیں کہ انہوں نے جنگلہ بس سروس بنا دی، موٹروے بنا دی، میاں صاحب سڑکیں بنانے سے قوم نہیں بنتی، قومیں تب بنتی ہیں جب انہیں عدل و انصاف دے کر آپ ان کو اکٹھا کرتے ہیں، کیا پانچ باریاں لے کر پنجاب میں عدل و انصاف آیا، کیا پولیس کے تھانے میں ظلم ختم ہوا، کیا پولیس کا غلط استعمال کرنا ختم ہوا، کیا پٹواریوں کا نظام ٹھیک ہوا، کیا اس ملک کے کمزور اور غریب طبقے کو سہارا دیا ، کیا تعلیم کا نظام ٹھیک ہوا، ہسپتال ٹھیک ہوئے، میاں صاحب سڑکیں بنانے سے قوم نہیں بنتی بلکہ جب ایک قوم بن جاتی ہے وہ خود ہی سڑکیں بنا لیتی ہے۔ عمران خان نے کہا کہ نوجوانوں کو تاریخ کا حصہ بنانا چاہتا ہوں، پچھلی صدی میں جرمنی اور جاپان جو دوسری جنگ عظیم میں بالکل برباد ہو گئے اور جہاں ایک سڑک تک نہیں بچی تھی، دس سال میں وہ دونوں ملک پھر عظیم قومیں بن گئیں، کیا وجہ تھی کیونکہ ان کے حکمرانوں نے بلٹ ٹرین بنانے کی کوشش نہیں کی، سڑکیں بنانے کی کوشش نہیں کی، انہوں نے اپنی قوم پر پیسہ خرچ کیا، اپنے انسانوں پر پیسہ خرچ کیا، ان کی تعلیم پر پیسہ خرچ کیا، ان کی صحت کا خیال رکھا، انہیں عدل و انصاف دیا انہوں نے اپنے لوگوں کو روزگار دیا ، جب آپ اپنی قوم کے اوپر پیسہ خرچ کرتے ہیں تو پھر وہ قوم خود ہی اپنے پل بناتی ہے اور اپنی سڑکیں بناتی ہے لیکن جب قوم کو ملے ہی کچھ نہ، ان کو بنیادق حقوق نہ دیں تو وہ قوم کبھی نہیں رہتی اور تقسیم ہو جاتی ہے۔ عمران خان نے کہا کہ تحریک انصاف سڑکیں یا پل نہیں بلکہ قوم بنائے گی، عدل و انصاف کا نظام لائے گی، ہم بڑے بڑے مگرمچھ جو ملک کا خون چوس رہے ہیں کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کریں گے، کبھی کوئی چور کسی چور کا احتساب نہیں کر سکتا بلکہ مک مکا کرتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ شریف برادران نے ایک ارب روپیہ ملک سے چوری کر کے باہر بھیجا، ان کے داماد اسحاق ڈار نے یہ کہا ہے، حدیبیہ پیپر مل میں 30 ملین ڈالر باہر گیا، اصغر خان کیس میں نواز شریف کو آئی ایس آئی نے پیسہ دیا ۔ عمران خان نے کہا کہ یہ سیاستدان ملک سے کرپشن ختم نہیں کر سکتے اور جب تک کرپشن ختم نہیں ہو گی ہمارا کوئی مستقبل نہیں، ہمارے پاس ملک چلانے کیلئے پیسہ نہیں، تعلیم دینے کیلئے پیسہ نہیں، ہسپتال بنانے کیلئے پیسہ نہیں، روزگار دینے کیلئے پیسہ نہیں، بجلی بنانے کیلئے پیسہ نہیں، پاکستان میں اندھیرا ہے، فیکٹریاں بند ہیں، ہم جو نیا پاکستان بنانے جا رہے ہیں اس میں عدل و انصاف تعلیم ہو گی، امیر اور غریب بچوں کیلئے ایک ہی نصاب ہو گا ، سرکاری سکولوں کے اندر پانچ گناہ زیادہ پیسہ خرچ کریں گے۔ عمران خان نے کہا کہ میں اقتدار میں آئے بغیر شوکت خانم ہسپتال بنا سکتا ہوں تو ہم انشاءاللہ سارے پاکستان میں ہسپتالوں کا جال بچھائیں گے، غریب آدمی دوائی لیتا ہے تو اس کے پاس روٹی لینے کے پیسے نہیں ہوتے۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالی کبھی کبھی موقع دیتا ہے قوم کو اپنی تقدیر بدلنے کا ، اس موقع کو آپ نے جانے نہیں دینا، گیارہ مئی کے انتخابات کو اپنی جنگ سمجھیں اور گھر گھر نکلیں، بچو آپ ووٹ نہیں ڈال سکتے لیکن اپنے ماں باپ سے کہیں کہ بلے کو ووٹ دیں کیونکہ یہ ہمارے مستقبل کی بات ہے۔انہوں نے کہا کہ کبھی پاکستان کو کسی کے سامنے نہیں جھکنے دوں گا ، ہم نئے پاکستان کو اسلامی ریاست بنائیں گے اور امریکہ سے کبھی قرضہ نہیں لیں گے۔ انہوں نے نوجوانون کو مکاطب کرتے ہوئے کہا کہ سیالکوٹ باشعور نوجوانوں کا شہر ہے، اقبال کے شاہنو!اقبال کا پاکستان بننے جا رہا ہے۔ عمران خان کبھی کسی کے سامنے نہیں جھکا اور نہ ہی اپنے ملک کو جھکنے دوں گا ۔ انہوں نے کہا کہ آج رحمان ملک نے بتایا کہ شریف برادرن نے کتنے روپے کی منی لاڈرنگ کی ہے،بلے سے ملک کے سب بڑے بڑے مگر مچھوں اور چوروں کو پھینٹا لگانا ہے۔

مزید : قصور /اہم خبریں