آم کی بر وقت اور درست بر د اشت نہ کرنے سے 35تا40 فیصد سرمایہ ضائع ہوجاتا ہے: ماہرین

آم کی بر وقت اور درست بر د اشت نہ کرنے سے 35تا40 فیصد سرمایہ ضائع ہوجاتا ہے: ...

  

سرگودھا (اے پی پی) زرعی ماہرین نے کہاہے کہ آم کے پھل کے معیار کو قائم رکھے بغیر اچھی آمدن کی توقع نہیں کی جاسکتی۔ زرعی ماہرین نے ا ے پی پی کوبتایاکہ باغبان اکثر لاعلمی اورفنی تعلیم کی کمی کی وجہ سے پھل کو بر وقت اور درست بر د اشت نہیں کرپاتے جس کی وجہ سے اوسط 35تا40چالیس فیصد کا انتہائی قیمتی سرمایہ ضائع ہوجاتا ہے آم کا پودا ہرسال مختلف ناگزیر مراحل سے گزرنے کے بعدپھل دینے کے قابل ہوتا ہے ان میں سے کسی بھی ایک مرحلہ کی ناکامی براہ راست پیداوار پر منفی اثرا ت مرتب کرتی ہے ا س لیے با غبان حضرا ت آم کے با غوں کی بہتر دیکھ بھا ل کیلئے زرعی ماہرین سے مشاورت کرتے رہیں اورماہرین کی مشاور ت سے ہی آم کے پھل کے معیار کو قائم رکھنے کیلئے اقداما ت کریں ۔

کیونکہ آم کے پھل کے معیار کوقائم رکھ کر ہی ا س سے اچھی آمدنی حاصل کر نا ممکن ہوتا ہے ۔

(sg/jav/ama 1220:

مزید :

کامرس -