شفا پانے والے بچے پر ایڈز کا حملہ

شفا پانے والے بچے پر ایڈز کا حملہ
شفا پانے والے بچے پر ایڈز کا حملہ
کیپشن: AIDS Baby

  

 اوٹاوا (نیوزڈیسک)ایڈز کو دنیا کی خطرناک ترین امراض میں سے ایک سمجھا جا تا ہے اور اس کے مکمل علاج کے لئے وسیع پیمانے پر کوششیں کی جار ہی ہیں۔ایک کینیڈین بچے میں باقاعدہ علاج کے خاتمہ کے مختصر عرصے میں ہی مرض کے دوبارہ حملے نے ڈاکٹروں کو خبر دار کر دیا ہے ۔ یہ بچہ ان پانچ کینیڈین بچو ں میں سے ایک ہے کہ جو پیدائشی طور پر ایڈز کے مرض میں مبتلا تھے۔ اس بچے کا پیدائش کے 24گھنٹوں کے دوران ہی بھرپور علاج شروع کر دیا گیا تھا اور اب یہ سمجھا جا رہا تھا کہ یہ ایڈز کے مرض سے نجات پا چکا ہے لیکن مرض نے دوبارہ حملہ کر دیا ۔ دیگر چار بچو ں کا بھی اسی طرح کا علاج کیاگیا ہے اور ان پانچوں کو ایڈز سے محفوظ سمجھا جا رہا تھا ۔ تین سال 3ماہ کی عمر میں جب اس بچے کی ادویات کو بند ہوئے ابھی دو ہفتے ہی ہوئے تھے تو اس پر دوبارہ ایڈز نے حملہ کر دیا ۔ چلڈرن ہسپتال آف ایسٹرن آنٹا ریوکی ڈاکٹر لنڈی شیمسن نے کہا کہ یہ خطرے کی علامت ہے ۔

مزید :

بین الاقوامی -