تھانہ مانگا منڈی کے اہلکار وں نے شہریوں کو لوٹنا شروع کردیا

تھانہ مانگا منڈی کے اہلکار وں نے شہریوں کو لوٹنا شروع کردیا

  

مانگا منڈی (نمائندہ خصوصی) تھانہ مانگا منڈی کے اہلکار وں نے ناکہ لگاکر راہ گیروں اور شہریوں کو دن رات لوٹنا شروع کردیا ، نذرانہ لینے کے ریٹ مقرر کرکے 100روپے سے لیکر 200روپے زبردستی وصول کرتے ہے۔ تفصیلات کے مطابق تھانہ مانگا منڈی پولیس کے اہلکار موٹر سائیکل پر سوار ہوکر چار یا پانچ کی ٹولیوں میں اکھٹے ہوکر شامکی بھٹیاں موٹروے پر اور ہنڈا فیکٹری کے قریب رائےونڈ روڈ پر راکو فیکٹری کے قریب ناکے لگا کرموٹر سائیکل سواروں اور ٹریکر ٹرالیوں والوں کو روک کر چیکنگ کرنے کے بہانے دیہاڑی بنانے میں مصروف رہتے ہیں ،خاص طور پر فیملی والے موٹر سائیکل سواروں اور کار سواروں کو گرمی میں کئی کئی گھنٹے پریشان کرکے نذرانہ وصول کرنے کے بعد چھوڑتے ہیں ۔بتایا گیا ہے کہ موٹروے پر صرف موٹروے پولیس ہی چیکنگ کرتی ہے، تھانہ مانگا منڈی پولیس صرف مخبری ہونے پر ملتان روڈ پر ناکہ لگا سکتی ہے دوسری طرف تھانہ مانگا منڈی پولیس اور موبائل گاڑی میں تعینات پولیس اہلکار وں نے وارداتوں پر قابو پانے اور گشت کرنے کی بجائے رات کو ایک جگہ ناکہ لگا کر مبینہ طور پر موٹر سائیکل سواروں اور ٹریکر ٹرالیوںکو روک کر زبردستی نذرانہ وصول کرنے کا وطیرہ بنا رکھا ہے۔ موبائل گاڑی پر انچارج اے ایس آئی ریاض احمد نے تین اہلکاروں کو ساتھ لےکر رائےونڈ روڈ پل بائی پاس کے قریب ناکہ لگاکر لوٹ مار کرنے کا بازار گرم کررکھا ہے ۔ نمائندہ روزنامہ ”پاکستان “عوام کی شکایت پر رات کے تقریباًگیارہ بجے وہاں گئے تو اے ایس آئی ریاض احمداور پولیس اہلکارچار پانچ موٹر سائیکل سواروں کو روک کر بدتمیزی کر رہے تھے۔ نمائندہ نےدرےافت کیا تو انہوں نے کہا کہ ہم جو کچھ بھی کر رہے ہیں پولیس کے اعلیٰ حکام کے حکم پر کر رہے ہیں ہمارے پاس ڈکیتی ،راہ زنی،چوری کی روک تھام کرنے کےلئے کوئی الہ دین کا چراع نہیں ہے ۔ شہریوں محمد اعظم ،طارق محمود ،عمران علی،مجیب الرحمن،خالد محمود ،وقاض احمد،محمد عرفان ،ملک رضوان نے سی سی پی او لاہورسے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

علاقائی -