بھارت آج بھی مسلمانوں کیلئے مقتل گاہ بنا ہوا ہے،ناصر اقبال خان

بھارت آج بھی مسلمانوں کیلئے مقتل گاہ بنا ہوا ہے،ناصر اقبال خان

  

لاہور (پ ر) ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدر محمد ناصراقبال خان، سیکرٹری جنرل محمدرضاایڈووکیٹ ، مرکزی سینئر نائب صدر محمدفاروق چوہان ، صدرمدینہ منورہ سرفراز خان نیازی،صدرکراچی یونس میمن،صدرپنجاب محمدیونس ملک،نائب صدرعزت رسول ایڈووکیٹ،صدر چنیوٹ رانا شہزادٹیپو، صدرفیصل آبادچودھری ندیم مصطفی ، صدر شیخوپورہ عمران حیدر اورنائب صدرلاہورمہران اجمل خان نے کہا ہے کہ بھارت آج بھی مسلمانوں کیلئے مقتل گاہ بناہوا ہے بھارتی ریاست آسام میں مسلمانوں کے قتل عام پریواین ،امریکہ ،برطانیہ اوریورپ کی خاموشی نے انسانیت کاسرشرم سے جھکادیااسلام کے ساتھ تعصب کی بنیادپرمغرب والے مسلمانوں کے انسانی حقوق کااحترام نہیں کرتے بھارت کاوجودانسانیت کیلئے ایک بوجھ ہے،بھارت میں مسلمانوں سمیت کوئی اقلیت محفوظ نہیں بھارتی سیاستدانوں نے الیکشن میں کامیابی کیلئے پاکستان کیخلاف زہراگلنا اورمسلمانوں کے خون سے ہولی کھیلنا اپنا حق اورفرض سمجھ لیا ہے وہ ایک اجلا س سے خطاب کررہے تھےاجلا س کے دوران آسام میں بیگناہ مسلمانوں کے قتل عام پرشدیدغم وغصہ کااظہارکرتے ہوئے اقوام متحدہ سے فوری مداخلت کرنے کامطالبہ کیا گیا محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ بھارت کا بدنام زمانہ سیاستدان مودی مسلمانوں کیلئے ایک موذی بیماری بناہوا ہے بھارت کے بیشتر انتہاپسندہندوسیاستدان مسلمانوں کے خون کے پیاسےہیںاور وہ اپنے سیاسی مفادکیلئے فسادات کوہوادینے میں کوئی کسرنہیں چھوڑتے انہوں نے کہا کہ بھارتی سیاستدان محض دنیا کوگمراہ کرنے کیلئے جمہوریت کاڈھونگ رچاتے ہیں ،حقیقت میں بھارت ایک انتہاپسنداورجنونی ریاست ہے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -