ہر کام کے لئے ’جنون‘ ضروری

ہر کام کے لئے ’جنون‘ ضروری
ہر کام کے لئے ’جنون‘ ضروری
کیپشن: psychopath

  

لندن (بیورونیوز) ’’سائیکوپیتھ‘‘ یا ’’دماغی خلل‘‘ کے الفاظ سنتے ہی ہمارے ذہن میں کسی بے حس قاتل، پاگل یا خطرناک شخص کا تصور ابھرتا ہے لیکن ماہرین نفسیات اس لفظ کا یہ مطلب نہیں لیتے۔ نفسیات دانوں کے نزدیک سائیکو پیتھ ہونے کا مطلب کچھ مخصوص شدید رویوں کا حامل ہونا ہے۔ عام طور پر ان رویوں میں بے حسی اور غور غرضی وغیرہ شامل ہوتے ہیں مگر ان میں خود اعتمادی، بے خوفی اور ذہن کے پکے ہونے کا رویہ بھی شامل ہے۔ ماہر نفسیات ڈاکٹر کیون ڈٹن کا کہنا ہے کہ کوئی بھی شخص کلی طور پر اچھا یا برا نہیں ہوتا۔ ہمارے رویوں کے مختلف امتزاج سے ہماری شخصیت تخلیق پاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سائیکو پیتھ اچھے بھی ہوسکتے ہیں اور برے بھی، برے سائیکو پیتھ اپنے رویوں کو کنٹرول نہیں کرپاتے اور شدت پسندی کے رویے کا اظہارکرتے ہیں۔ جبکہ اچھے سائیکوپیتھ اپنے رویے کی شدت کو کنٹرول کرکے بڑی بڑی کامیابیاں حاصل کرسکتے ہیں۔ یہ لوگ خصوصاً ایسے کاموں میں کامیاب ہوتے ہیں جہاں بے رحمی سے سخت فیصلے کرنے پڑتے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -