جعلی ٹرانسفر روکنے کیلئے کوپرآیٹو سوسائیٹز کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کرنیکا فیصلہ ،بجٹ منظور

جعلی ٹرانسفر روکنے کیلئے کوپرآیٹو سوسائیٹز کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کرنیکا ...

 لاہور(عامر بٹ سے)سیکریٹری کوآپریٹو پنجاب نے جعلی ٹرانسفر کی روک تھام ،رفاعہ عامہ کیلئے مختص کی جانے والی زمین کی بندر بانٹ کے ذریعے ہضم کرنے والے طریقہ کار کے خاتمے کیلئے صوبے بھر کی کوپرآیٹو سوسائیٹیوں کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے جسے کے تحت پنجاب حکومت نے سیکریٹری کوآپریٹو کی جانب سے عوام کے مفادات میں مرتب کی جانے والی سفارشات کو مد نظر رکھتے ہوئے ابتدائی طورپر 10کروڑ روپے کے بجٹ کی فوری منظور ی دیدی ہے معلومات کے مطابق صوبے بھر میں جعلی ٹرانسفر کے ذریعے کوآپریٹوسوسائٹیوں میں ہونے والی بے ضابطگیوں کی روک تھام کیلئے سیکریٹری کوآپریٹو پنجاب بابر حیات تارڈ متحرک ہو چکے ہیں اور اس حوالے سے صوبے بھر کی کوآپریٹو سوسائٹیوں کے ریکارڈ بھی کمپیوٹرائزڈ کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے مزید معلوم ہوا ہے کہ اس حوالے سے سیکریٹری کوآپریٹو پنجاب کی مرتب کردہ سفارشات کی روشنی میں حکومت پنجاب نے ابتدائی طور پر فور ی 10کروڑ ڑروپے کے بجٹ کی منظوری بھی دے دی ہے جبکہ محکمہ کوآپریٹو کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کرنے کیلئے آئی ٹی کا سیل بھی پی سی بی ایل کی عمارت میں قائم کیا جارہا ہے ،ڈیٹا انٹری ،سکیننگ اور آئی ٹی کے سپیشلسٹ عملے کی بھرتیوں کا سلسلہ بھی آخری مراحل میں داخل ہو چکا ہے اس منصوبے کی تکمیل کے لئے ایک سال کا ٹائم فریم مقرر کیا گیا ہے ،کوآپریٹو ذرائع سے مزید معلوم ہوا ہے کہ محکمہ کوآپریٹوکی تاریخ میں یہ پہلے سیکریٹری کوآپریٹو پنجاب ہیں جن کے ادوار میں بائیومیٹرک سسٹم کی تنصیب کی گئی ہے اور پہلی مرتبہ محکمہ کوآپریٹو کی حدود میں آنے والی سوسائٹیوں کا ریکارڈ عملی طور پر کمپیوٹرائزڈ سسٹم میں محفوظ کیا جارہا ہے ذرائع نے مزید آگاہی دی ہے کہ چند ماہ میں تمام کوآپریٹو سوسائٹیوں کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ سسٹم میں مکمل طور پر فیڈ کردیا جائے گا ،جن میں سوسائٹی نقشہ ،کٹنگ کے ساتھ پلاٹوں کی تعداد ،ممبرز کی تعداد اور رقبہ جو کہ پارک ،سکول ،قبرستان ،کمیونٹی سنٹر ،ڈسپنسری ،ہسپتال اور رفاعہ عامہ کیلئے مختص کیا ہو گا وہ بھی محفوظ کر لیا جائے گا جبکہ جبکہ جس سوفٹ ویئر کے تحت کمپیوٹرائزڈ سسٹم میں فیڈنگ کی جائے گی اس کا لنک پنجاب کی تمام کوآپریٹو سوسائٹیوں کے ساتھ برائے راست چل رہا ہو گا اور اس حوالے سے سوسائٹی انتظامیہ کی جانب سے پلاٹس ٹرانسفر کی کوشش اور کاروائی تب تک قبول نہیں کی جائے گی جب تک محکمہ کوآپریٹو کے آئی ٹی سیل سسٹم اس کو قبول نہیں کر ے گا آئی ٹی سیل کی مانیٹرنگ اور ٹیکنیکل سسٹم کو استعمال کرنے کیلئے باقاعدہ گریڈ 14کے آفیسرز کی بھی تعیناتی عمل میں لائی جائے گی ،آئی ٹی سسٹم کو استعمال کرنے کا طریقہ کار اور پالیسز بھی کوآپریٹو سوسائیٹیوں میں درپیش مسائل کو دیکھتے ہوئے مرتب کی گئی ہیں جس کا مقصد کوآپریٹو سوسائٹی میں انوسٹمنٹ کرنے والے عام صارفین سے لے کر انوسٹرز تک کے حقوق اور مال کے تحفظ کو یقینی بنانا ہے اور کوآپریٹو سوسائٹیوں میں ہونے والی جعلسازی ،دو نمبری اور بے ضابطگیوں کو جڑ سے اکھاڑنا ہے دوسری جانب سوسائٹیوں کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ ہونے کی اطلاعات نے سوسائیٹیوں میں موجود لینڈ مافیا کی نیندیں حرام کر رکھی ہیں اور وہ اس منصوبے میں رکاوٹ ڈالنے کیلئے ابھی سے پلاننگ کرنے میں مصروف ہو چکے ہیں ،دوسری جانب سیکریٹری کوآپریٹو پنجاب کا کہنا ہے کہ محکمہ کوآپریٹو کا ریکارڈآنے والے ایک سال میں مکمل طور پر کمپیوٹرائزڈہو گا ،شہریوں کی کثیر تعداد آن لائن سسٹم کے ذریعے اپنی جائیداد کا وزٹ بھی کر سکیں گی اور ریکارڈ تک رسائی بھی حاصل ہو جائے گی جبکہ ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ ہونے سے بے تحاشہ فراڈ ،جعلسازی کے واقعات کا بھی ہمیشہ کے لئے خاتمہ ہو جائے گا اور وزیراعلیٰ پنجاب کے کے ویژن کے مطابق کوآپریٹو ادارے اور اس کے دفاتروں میں صاف اور شفاف ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ سسٹم میں فیڈ کر دیا جائے گا جس ریکارڈ میں متنازعہ پن ہے اس کی درستگی کی جائے گی اس منصوبے کے حوالے سے وقفہ وقفہ سے تبدیلیاں اور اقدامات رہیں گے۔ جعلی ٹرانسفر

مزید : صفحہ آخر