دو بیویوں کو ایک ہی گھر میں رکھنے کا انجام،عرب شہری کی عبرتناک کہانی

دو بیویوں کو ایک ہی گھر میں رکھنے کا انجام،عرب شہری کی عبرتناک کہانی
دو بیویوں کو ایک ہی گھر میں رکھنے کا انجام،عرب شہری کی عبرتناک کہانی

  

دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ عرب امارات میں ایک خاتون نے حسد کا شکار ہوکر اپنے خاوند کا نصف گھر اجاڑ دیا۔ ”ایمریٹس 247“ سے بات کرتے ہوئے ایڈووکیٹ جنرل محمد رستم نے بتایا کہ انہوں نے اس گھر کو اجڑنے سے بچانے کی بہت کوشش کی لیکن مسائل بہت پیچیدہ ہوچکے تھے۔

مزیدپڑھیں:شاہ سلمان کی یمنی شہریوں کیلئے خصوصی رعایت،ویزے میں چھ ماہ توسیع کا حکم

تفصیلات کے مطابق دو گہری سہیلیوں کی شادی ایک ہی شخص سے ہوئی تھی اور وہ ایک عرصہ سے خوشیوں بھری زندگی گزار رہی تھیں۔دونوں مل کر شاپنگ کے لئے، بیوٹی سیلون اور کیفیز میں جاتی تھیں، لیکن پھر ایک دن ایک بیوی کے دوسری کے ساتھ کچھ اختلافات پیدا ہوگئے جس کے بعد اس نے اپنے خاوند کو شکایت لگائی کہ دوسری کافی شاپ سے غائب ہوجاتی ہے اور کال کا جواب بھی نہیں دیتی۔ اس نے شکایت میں بتایا کہ ایسا کئی دفعہ ہوچکا تھا۔ خاوند نے یہ معلومات ملنے کے بعد دوسری بیوی کے ساتھ جھگڑا کیا اور اس کی مار پٹائی بھی کی۔ خاتون بدسلوکی کے بعد معاملہ حکام کے پاس لے گئی جنہوں نے صلح صفائی کی بہت کوششیں کیں لیکن بالآخر یہ معاملہ عدالت پہنچ گیا۔ ایڈووکیٹ رستم کا خیال ہے کہ یہ گھر اب پہلے کی طرح آباد نہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس