سی پیک دنیا میں نئے معاشی نظام کی طرف اہم ترین قدم ہے،میاں زاہد حسین

سی پیک دنیا میں نئے معاشی نظام کی طرف اہم ترین قدم ہے،میاں زاہد حسین

  

کراچی(این این آئی)پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر ،بزنس مین پینل کے سینیئر وائس چےئر مین اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ سی پیک دنیا میں نئے معاشی نظام کی طرف اہم ترین قدم ہے جس سے تیسری دنیا کی ترقی کی راہیں کھلیں گی۔ مغربی معاشی ماڈل نے تیسری دنیا کے وسائل امیر ممالک کی طرف منتقل کیئے اور انھیں غربت، جہالت اور دہشت گردی کی دلدل میں دھکیل دیا جبکہ نیا اکنامک ماڈل اس سے متضاد ہے جو غریب ممالک کی ترقی کو یقینی بنائے گا۔ میاں زاہد حسین نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ اقتصادی راہداری پاکستانی معیشت کیلئے آکسیجن کا کام کرے گی جس سے ملکی ترقی کا عمل تیز ہو جائے گا اور جی ڈی پی میں زبردست اضافہ ہونے سے برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ ہوگااور روزگار بڑھے گا ۔

؂جبکہ پاکستان اور چین کے مابین تجارتی عدم توازن کافی کم ہو جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ بھارت اس منصوبے کی مخالفت چھوڑ کر اس میں شامل ہو جائے تاکہ اسے پاکستان کے راستے افغانستان کی منڈیوں تک رسائل مل سکے اور اسکی معیشت ترقی کر سکے مگر اسکے لئے نئی دہلی کو کشمیر سمیت تمام متنازعہ معاملات پر اپنی سوچ تبدیل کرنا ہو گی اور عملی طور پر صورتحال کو بہتر بنانے کیلئے اقدامات کرنا ہونگے۔ انھوں نے کہا کہ وزیر اعظم نواز شریف ایک اعلیٰ سطحی وفد کے ہمراہ چین جا رہے ہیں جہاں 13مئی کو چین کے صدر سے ملاقات،14 اور 15 مئی کو بیلٹ اینڈ روڑ فورم میں شرکت کریں گے اس دوران دونوں ممالک کے مابین سی پیک کے متعلق ایک طویل المعیاد منصوبے پر دستخط متوقع ہیں۔ میاں زاہد حسین نے کہا کہ 2018 میں سی پیک کے تحت بننے والے توانائی کے بعض منصوبے پیداوار شروع کر دینگے جس سے نیشنل گرڈ میں سات ہزار میگاواٹ بجلی شامل ہو جائے گی جبکہ مشرقی اور مغربی روٹ باہم منسلک ہو جائیں گے جس سے صنعتکاری کے عمل کا بھر پورآغاز ہو جائے گا جس میں9 صنعتی زونز کا قیام شامل ہے۔جسکے لئے موجودہ حکومت اورعوام بجا طور پر مبارکباد کے مستحق ہیں ۔

مزید :

کامرس -