کم گنجائش ، تنگ ماحول ، اراضی ریکارڈ سنٹر جیلوں کا منظر پیش کرنے لگے

کم گنجائش ، تنگ ماحول ، اراضی ریکارڈ سنٹر جیلوں کا منظر پیش کرنے لگے
 کم گنجائش ، تنگ ماحول ، اراضی ریکارڈ سنٹر جیلوں کا منظر پیش کرنے لگے

  

لاہور(عامر بٹ سے)پنجاب لینڈریکارڈ اتھارٹی کے شعبہ سول ورکس انجینئرنگ کی جانب سے پنجاب کے 36اضلاع کی 143تحصیلوں میں تعمیر کردہ اراضی ریکارڈ سنٹرز نے پاکستانی جیلوں کی یاد تازہ کر دی ، کم گنجائش کے حامل اراضی ریکارڈ سنٹرز میں روزانہ کی بنیاد پر فرد اور انتقال کے حصول کے لئے آنے والے سینکڑوں سائلوں کے ساتھ سنٹر سٹاف بھی مصیبت میں مبتلاء ہو گیا، بلڈنگ سٹرکچر اوربلڈنگ ڈیزائنگ کے تکنیکی پہلوؤں سے نابلد انجینئرز نے تمام تحصیلوں میں ایک ہی طرز پر اراضی ریکارڈ سنٹر ز کی عماتیں تعمیر کیں ، پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی انتظامیہ سائلین کو شدید گرمی میں سایہ دار جگہ،ٹھنڈے پانی کی دستیابی ،ایئر کولر اور پنکھوں کی فراہمی کے متعلق کئے گئے دعوؤں میں اگر مگر سے آگے نہ بڑھ سکی ، تفصیلات کے مطابق اراضی ریکارڈ سنٹر کی غلط تعمیر اور شہریوں کے بیٹھنے کی جگہ میں کمی کے سبب سٹاف کو بھی شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ،صوبائی دارالحکومت کی ضلع کچہری میں قائم کر دہ تحصیل رائے ونڈ اور تحصیل سٹی میں بھی جگہ انتہائی کم ہے جس کی وجہ سے شہریوں کو جہاں سروس حاصل کرنے میں شدید دشواری کا سامنا ہے وہاں کام کرنے والا سٹاف بھی اس صورتحال سے پریشان حال نظر آرہا ہے اس طرح تحصیل کینٹ اور ماڈل ٹاؤن کے اراضی ریکارڈ سنٹر میں بھی جگہ کی کمی نے شہریوں کو پریشانی میں مبتلاء کر رکھا ہے ۔ذرائع کے مطابق جس اراضی ریکارڈ سنٹر میں روزانہ کی بنیاد پر 300سے زائد افراد کی انٹری ہو رہی ہے وہاں صرف 50افراد کے بیٹھنے اور سروس مہیا کر نے کی پلاننگ کے تحت اراضی ریکارڈ سنٹر کی تعمیر کی گئی۔قابل ذکر بات یہ ہے کہ اتنی سنگین غلطی کے سرزد ہونے کے باوجود پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کے شعبہ سول ورکس کا سٹاف اس ذمہ داری کو قبول کرنے کو تیار نہیں بلکہ اراضی ریکارڈ سنٹر کی تعمیر کی ذمہ داری بھی انہوں نے ریونیو سٹاف پر ڈال دی ہے تاہم پنجاب لینڈ ریکارڈ ریکارڈ اتھارٹی کے ترجمان کا کہنا ہے اس شکایات کا وہ نوٹس لے چکے ہیں اس ضمن میں صوبے بھر میں جہاں اراضی ریکارڈ سنٹر میں جگہ کی کمی ہے وہاں وزٹنگ ایریااور ایڈیشنل سنٹرز تعمیر کروائے جارہے ہیں ،جہاں پنکھے ،ایئر کولر ،ٹھنڈے پانی کی مشین اور واش روم کی سہولت بھی میسر کی جائے گی ،انہوں نے مزید کہا کہ ریونیو سٹاف کی جانب سے جو ڈیٹا فرد کے اجراء اور انتقالات کی تصدیق کے لئے مہیا کیا گیا ہے اس کی روشنی میں بلڈنگ کی ڈیزائنگ کی گئی تھی جو کہ حقائق سے برعکس تھا جس کی وجہ سے بلڈنگ چھوٹی بن گئی اور اس حوالے سے متعدد مرتبہ کمشنرز او ر ڈسٹرکٹ کلکٹرز کو بھی آگاہ کر دیا ہے عوام الناس کی سہولیات کے لئے کوئی کسرنہیں چھوڑیں گے ،شکایات کا فوری ازالہ کررہے ہیں ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -