حکمران دوہرے رویے ختم کرکے سرائیکی قوم کو ان کا حق دیں، غلام فرید کوریجہ

حکمران دوہرے رویے ختم کرکے سرائیکی قوم کو ان کا حق دیں، غلام فرید کوریجہ

  

ملتان (سٹی رپورٹر) سرائیکی وسیب کے خلاف انتقامی کاروائیاں بند کی جائیں اور سرائیکی صوبہ بنا کر وسیب کے لوگوں کو ان کی مرضی اور منشا کے مطابق زندگی گزارنے کا حق دیا جائے ۔ ان خیالات کا اظہار سرائیکستان عوامی اتحاد کے رہنما خواجہ غلام فرید کوریجہ نے ظہور دھریجہ سے ملاقات کے دوران کیا ۔ اس موقع پر مقصود دھریجہ اور موہن بھگت بھی موجود تھے۔ انہوں نے کہا کہ جھوک قومی ادارہ ہے ‘ حکومت کی طرف سے انتقامی کاروائیوں کی مذمت کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ظہور دھریجہ سرائیکی قوم(بقیہ نمبر55صفحہ12پر )

کے لیڈر اور ہیرو ہیں ‘ ان کو اور ان کے ادارے کو نقصان پہنچانے کا مقصد پورے سرائیکی وسیب اور سرائیکی قوم کو نقصان پہنچانا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکمرانوں نے پہلے بھی ظہور دھریجہ کے خلاف جھوٹے مقدمات درج کرائے ‘ جس سے وہ سرخرو ہوئے اور اب بھی وہ سرخرو ہونگے ۔ انہوں نے کہا کہ ظہور دھریجہ اور ان کے ادارے کے خلاف کیس بنانے والے پی آئی او راؤ تحسین خود ڈان لیکس میں معطل ہو چکے ہیں اور ان پر غداری کا الزام ہے ۔ وہ ظہور دھریجہ کو مرعوب کرنے کی بجائے غداری کے کیس کا سامنا کریں ۔ انہوں نے کہا کہ دربار فرید پر پابندیاں ہیں ، بزرگوں کے عرس پر پابندیاں ہیں مگر رنجیت سنگھ کی برسی کی نہ صرف اجازت دی جاتی ہے بلکہ اہتمام کے ساتھ منائی جاتی ہے۔ حکمران دوہرے رویے ختم کریں اور سرائیکی قوم کو ان کا حق دیں ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -