میرے شوہر کو شادیاں کرنے کا شوق ہےجو مجھ سمیت کئی لڑکیوں کی زندگی برباد کرنے کا باعث ہے,شیخوپورہ کی خاتون کا الزام

میرے شوہر کو شادیاں کرنے کا شوق ہےجو مجھ سمیت کئی لڑکیوں کی زندگی برباد کرنے ...
میرے شوہر کو شادیاں کرنے کا شوق ہےجو مجھ سمیت کئی لڑکیوں کی زندگی برباد کرنے کا باعث ہے,شیخوپورہ کی خاتون کا الزام

  

لاہور (ویب ڈیسک) شیخو پورہ کی رہائشی خاتون نے کہا ہے کہ  میرے شوہر عمران الہی کو شادیاں کرنے کا شوق ہے جو مجھ سمیت کئی لڑکیوں کی زندگی برباد کرنے کا باعث ہے ۔ ایک ماہ قبل مجھ سے شادی کی اور تین روز بعد گھر سے نکال دیا، ظلم و ستم کر کے تینلڑکیوں کو پہلے بھی خلع لینے پر مجبور کر چکا ہے، آجکل پھر ایک مذہبی چینل کے پروگرام میں شادی کا اشتہار دے رکھا ہے۔ مفتی طیب الرحمن ہر جگہ اس کا رشتہ کروانے اور نکاح پڑھانے کا ذمہ دار ہے ، اب مجھے اور میرے خاندان کی جانب سے دھمکیاں دی جارہی ہیں۔مجھے ان لوگوں سے تحفظ فراہم کیا جائے،

روزنامہ خبریں کے مطابق شیخوپورہ کی رہائشی ”الف “ نے الزام لگایا ہے کہ اس کا خاوند عمران الٰہی مغل جو کہ راولپنڈی خیابان سرسید کا رہائشی ہے نے ایک ماہ قبل 2 اپریل کو اس سے نکاح کیا جبکہ اسے بتایا گیا تھا کہ وہ پہلے سے شادی شدہ نہیں ہے اور یہی کچھ نکاح نامہ میں بھی درج کروایا گیا جس کے نکاح خوان مدرسہ عثمانیہ بن عفان کے مہتمم مفتی طیب الرحمن تھے اور وہی اس کا رشتہ لے کر اس کے گھر بھی آئے تھے نکاح کے بعد وہ اپنے خاوند کے گھر آگئی لیکن وہاں پر موجود عمران کے پہلی بیوی سے بچوں نے اسے بتایا کہ ان کے والد کی اٹک کی رہائشی افشاں سے شادی ہوئی جب اس نے اس حوالے سے استفسار کیا تو انہوں نے بتایا کہ ہماری والدہ نے اس لیے طلاق لی کہ ہمارے والد عمران الٰہی نے کئی شادیاں کیں ہیں جس پر میں نے پریشان ہو کر جب افشاں سے رابطہ کیا تو اس نے بتایا کہ اس سمیت وہ تین خواتین جن میںراولپنڈی کی رفعت جبین اور نفسیہ شیرازی سے اس نے باقاعدہ نکاح کیے جن میں سے نفسیہ کا نکاح مفتی طیب الرحمن کے بھائی مفتی طالب الرحمن نے پڑھوایا تھا۔

بدچلنی سے منع کرنے پر اہلیہ نے خاوند کو ڈنڈے مارمارکر قتل کر دیا‘ ملزمہ گرفتار

ان دونوں خواتین نے اس کے ظلم سے تنگ آکر خلع لے لیا تھا یہ بات معلوم ہونے پر میں نے اپنے گھر والوں سے رابطہ کیا جب میرے خاوند کو اس حوالے سے معلوم ہوا کہ میں نے افشاں سے رابطہ کیا ہے تو اس نے مجھے مارا اور ذلیل کرنا شروع کر دیا جس پر میں گھر والوں کے ساتھ اپنے گھر شیخوپورہ آگئی جس کے بعد اس نے میرا جینا محال کر دیا ہے اور دھمکیاں دے رہا ہے کہ تمہیں برباد کردونگا اور تم منہ دکھانے کے قابل نہیں رہوگی۔ مظلوم ”الف “ نے وزیراعلیٰ سے اپیل کی ہے کہ اسے ان ظالموں سے بچایا جائے کہیں وہ مجھے اور میرے خاندان کو کوئی نقصان نہ پہنچا دیں۔

کئی شادیوں کے حوالے سے مئوقف کیلئے جب مفتی طیب الرحمن سے رابطہ کیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ میرا قصور صرف اتنا ہے کہ میں نے نکاح پڑھوایا ہے یہ شخص ہماری مسجد میں نماز پڑھنے آتا ہے اور اس سے زیادہ میرا اس سے تعلق نہیں ہے۔ نکاح پڑھانے کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ یہ کوئی جرم نہیں ہے بلکہ نکاح نہ کرنا سنگین جرم کے ذمرے میں آتا ہے ہمارے پاس تو جو بھی آتا ہے ہم اس کی نکاح کے حوالے سے حوصلہ افزائی کرتے ہیں اور جب دونوں فریقین راضی ہوں تو گڑبڑ کا کیسے معلوم ہو گا۔ انہوں نے بتایا کہ وہ ” پیس ٹی وی “ پر پروگرام بھی کرتے ہیں اس لیے بہت سے لوگ ان سے مدد کی درخواست کرتے ہیں ۔

”میرے کزن نے شادی کا جھانسہ دیکرجنسی زیادتی کا نشانہ بنایا “، بھارتی پولیس نے نوجوان کو شادی کے روز گرفتار کر لیا

شادیوں کے شوقین عمران الہٰی سے جب اس بارے میں سوال کیا گیا تو اس نے کہا کہ اسلام میں شادیاں کرنا کوئی گناہ نہیں ہے اور میں بیک وقت چار شادیاں کر سکتا ہوں مجھ پر کوئی اس حوالے سے قدغن نہیں لگا سکتا ہے۔ اس کا مئوقف تھا کہ افشاں اور نفیسہ سے اس کا نکاح ہوا تھا جبکہ رفعت جبین نامی کسی خاتون کو نہیں جانتا ہوں ۔ افشاں سے میرے تین بچے جو کہ میرے پاس ہیں جبکہ نفیسہ سے ایک بیٹا ہے جس کا میں نام نفقہ ادا کرتا ہوں جبکہ ان دونوں نے مجھ سے اپنی مرضی سے خلع لیا تھا۔

ایک سوال کے جواب میں اس کا کہنا تھا کہ یہ تینوں خواتین منہ پھٹ اور بد تمیز ہیں مجھے اپنے بچوں کی ذمہ داری کیلئے ایک خاتون کی ضرورت ہے اس لیے شادیاں کیں۔ اقصیٰ نے بھی نکاح کے بعد گھر آمدپر میر ی پہلی بیوی سے رابطہ کیا جو مجھے منظور نہ تھا کیونکہ ان سے ہمارے خاندانی تعلقات خراب ہیں جب میں نے اسے ڈانٹا تو اس نے معافی مانگی لیکن بعد میں ازخود اپنے والد کے گھر چلی گئی۔ عمران الٰہی نے کہا کہ اگر اقصیٰ ہاشمی خلع کی درخواست دائر کرتی ہے تو اسے اس میں کوئی اعتراض نہیں ہے۔

مزید :

لاہور -