قاری کا 9 سالہ طالبعلم پر الٹا لٹکا کر وحشیانہ تشدد

قاری کا 9 سالہ طالبعلم پر الٹا لٹکا کر وحشیانہ تشدد
قاری کا 9 سالہ طالبعلم پر الٹا لٹکا کر وحشیانہ تشدد

  

حافظ آباد (ویب ڈیسک) قرآن پاک کی تعلیم حاصل کرنے والے 9 سالہ طالبعلم پر قاری کا الٹا لٹکا کر تشدد،بچہ بے ہوش پھر بھی قاری تشدد کرتا رہا۔ پولیس تھانہ ونیکے تارڑ نے تحقیقات کے بعد مقدمہ درج کرلیا، قاری فرار۔

غضنفر اقبال ولد احمد حسینر حمانی سکنہ بیری والا تھانہ ونیکے تارڑ تحصیل و ضلع حافظ آباد نے تھانہ ونیکے تارڑ میں درخواست دیتے ہوئے الزام عائد کیا ہے کہ اس کا 9 سالہ بیٹا عبداللہ قرآن پاک کی تعلیم کیلئے قاری محمد اقبال ولد محمد یوسف سے حاصل کرنے سائیں مہر دین کی بیٹھک میں جاتا تھا کہ گزشتہ روز عصر کے وقت وہ قرآن پاک پڑھنے گیا تو مذکورہ قاری نے اس کو برہنہ کرکہے الٹا لٹکا کر ڈنڈوں سے تشدد کردیا جس پر 9 سالہ معصوم عبداللہ بے ہوش ہوگیا مگر ظالم قاری بے ہوش ہونے پر بھی اس پر تشدد کرتا رہا۔

وہاں سے گزرنے والے افراد نے قاری کے ظلم سے چھڑایا اور اس کی اطلاع اس کے والد کو کی، جب غضنفر موقع پر پہنچا معصوم عبداللہ بے ہوش پڑا ہوا تھا، وہ اس کو بے ہوشی کی حالت میں گھر لے آیا اور دو گھنٹے بعد ہوش آیا تو تمام معاملات سے آگاہ کیا۔ پولیس کو تحریری درخواست دی مگر پولیس تھانہ ونیکے تارڑ نے تحقیقات کے بعد قاری محمد اقبال کے خلاف زیر دفعہ 337L(2),506,342 مقدمہ درج کرلیا۔ ذرائع کے مطابق قاری محمد اقبال گاﺅں چھوڑ کر فرار ہوگیا ہے۔

شاہدرہ: بدمعاش کی 5 بچوں کی ماں سے زیادتی، ویڈیو بنا کر بلیک میلنگ

مزید :

حافظ آباد -