’میں اپنی گاڑی میں بیٹھا تھا کہ وہ شخص آیا اور میرے کپڑے اتارنے لگا، میں نے منع کرنے کی کوشش کی لیکن پھر۔۔۔‘ پاکستانی شہری نے جج کو ایسی شرمناک بات بتادی کہ کمرہ عدالت میں ہر شخص کا منہ کھلا کا کھلا رہ گیا

’میں اپنی گاڑی میں بیٹھا تھا کہ وہ شخص آیا اور میرے کپڑے اتارنے لگا، میں نے ...
’میں اپنی گاڑی میں بیٹھا تھا کہ وہ شخص آیا اور میرے کپڑے اتارنے لگا، میں نے منع کرنے کی کوشش کی لیکن پھر۔۔۔‘ پاکستانی شہری نے جج کو ایسی شرمناک بات بتادی کہ کمرہ عدالت میں ہر شخص کا منہ کھلا کا کھلا رہ گیا

  

دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ عرب امارات میں اپنے ہم وطن کو قتل کرنے والے پاکستانی نوجوان نے عدالت میں قتل کی ایسی شرمناک وجہ بیان کر دی کہ سننے والے دنگ رہ گئے۔ نوجوان کا کہنا تھا کہ اس نے اپنی عزت بچانے کیلئے اپنے ہم وطن کو قتل کیا، جس پر عدالت نے اسے بری کردیا ہے۔

گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق 20 سالہ پاکستانی نوجوان نے بتایا کہ ”گزشتہ سال جب میں بیروزگار تھا تو مئی کے مہینے میں میرے ہم وطن شخص نے مجھے ملازمت دینے کے بہانے اپنے پاس بلایا۔ ایک روز میں گاڑی میں بیٹھا تھا کہ اس نے مجھے بے لباس کرکے میری عزت لوٹنے کی کوشش شروع کر دی، جس پر میں نے اپنا دفاع کرتے ہوئے ایک چاقو سے اس پر حملہ کردیا۔“

’مجھے یہاں نوکری کیلئے بلایا گیا تھا لیکن ائیرپورٹ پر ہی۔۔۔‘ 16 سالہ غیر ملکی لڑکی بھاگتے ہوئے دبئی کے پولیس سٹیشن میں گھس گئی اور اندر جاتے ہی ایسی بات بتادی کہ پولیس والوں کے چہرے بھی شرم سے لال ہوگئے

ملزم کے وکیل کا بھی کہنا تھا کہ وہ قتل کرنے کا ارادہ نہیں رکھتا تھا بلکہ محض اپنی عزت بچانے کی کوشش میں قتل کر بیٹھا۔ پولیس نے عدالت کو بتایا کہ جب وہ جائے وقوعہ پر پہنچے تو پاکستانی شخص پہلے ہی ہلاک ہوچکا تھا۔ اس کی گردن پر چاقو کا وار کیا گیا تھا۔

عدالت نے نوجوان پاکستانی ملزم کے مﺅقف کو تسلیم کرتے ہوئے اسے قتل کے جرم سے بری کر دیا ہے۔

مزید :

عرب دنیا -