’میں ایک سال تک روزانہ مچھلی کھاتا رہا اور پھر جب اپنے ٹیسٹ کروائے تو دیکھا کہ۔۔۔

’میں ایک سال تک روزانہ مچھلی کھاتا رہا اور پھر جب اپنے ٹیسٹ کروائے تو دیکھا ...
’میں ایک سال تک روزانہ مچھلی کھاتا رہا اور پھر جب اپنے ٹیسٹ کروائے تو دیکھا کہ۔۔۔

  

نیویارک(نیوزڈیسک) مچھلی کھانا انسان کے لئے کافی فائدہ مندہوتا ہے اور ایسا ہی کچھ اس شخص نے کیا اور دیکھئے پھر کیا نتائج برآمد ہوئے۔

تفصیلات کے مطابق نیویارک ٹائمز کے لکھاری پال گرینبرگ اپنی نئی ڈاکومینٹری The Fish On My Plateکے لئے روانہ ہواتو اس نے صرف مچھلی ہی کھائی۔اس نے ڈاکومینٹری میں یہ بتانا تھا کہ صرف مچھلی ہی کھائی جائے تو جسم پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ اس نے یہ تو سن رکھا تھا کہ مچھلی میں موجود اومیگا تھری کی وجہ سے کولیسٹرول، بلڈ پریشر، ذہنی تناﺅ اور بے خوابی کے مسائل حل ہوتے ہیں لیکن وہ ان کو عملی طور پر بھی دیکھنا چاہتا تھا۔اس کاکہنا ہے کہ اس نے ایک سال تک صرف مچھلی ہی کھائی اور ایک سال بعد اس کے ٹیسٹوں میں کوئی نمایا تبدیلی پیدا نہ ہوئی اور بلکہ اس کا بلڈ پریشر بڑھااور ساتھ ہی اس کے جسم میں مرکری کی مقدار بھی بڑھ چکی تھی اور ساتھ ہی اس کی یاداشت بھی کوئی زیادی اچھی نہ ہوئی۔ اس کا کہنا ہے کہ اگر آپ اومیگا تھری کے فوائد سے بھرپور استفادہ حاصل کرتے ہیں تو آپ کی سوچ غلط ہے۔

اس تجربے کے بعد آپ کو مچھلی کو یکسر ہی اپنی خوراک سے نہیں نکال دینا چاہیے بلکہ اس کی کچھ نہ کچھ مقدار ضرور کھانی چاہیے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ مچھلی صرف اومیگاتھری ہی کا نام نہیں بلکہ اس میں زنک، ایمینیوایسڈزاور وٹامن ڈی ہوتی ہے جن کی ہمارے جسم کو کافی زیادہ ضرورت ہوتی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ گوکہ اس میں مرکری کی مقدار ہوتی ہے لیکن یہ بہت زیادہ نہیں لہذاہفتے میں کم از کم دوبار مچھلی ضرور کھانی چاہیے کہ اس طرح جسم کو وٹامن اور دیگر غذائیت ملتی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -