’میں 19 برس کا ہوں اور جلد میری شادی ہونے والی ہے لیکن مجھے ڈر ہے کہ کہیں شادی کے بعد۔۔۔‘ پاکستانی نوجوان نے انٹرنیٹ پر ڈاکٹر سے ایسا سوال پوچھ لیا کہ جان کر آپ بھی ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہوجائیں گے

’میں 19 برس کا ہوں اور جلد میری شادی ہونے والی ہے لیکن مجھے ڈر ہے کہ کہیں شادی ...
’میں 19 برس کا ہوں اور جلد میری شادی ہونے والی ہے لیکن مجھے ڈر ہے کہ کہیں شادی کے بعد۔۔۔‘ پاکستانی نوجوان نے انٹرنیٹ پر ڈاکٹر سے ایسا سوال پوچھ لیا کہ جان کر آپ بھی ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہوجائیں گے

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)شادی سے قبل نوجوانوں کے ذہن میں کئی طرح کے سوالات ہوتے ہیں۔ ایک ایسے ہی نوجوان نے ازدواجی فرائض کے صحت پر ممکنہ اثرات کے بارے سوچا تو بری طرح گھبرا گیا اور آن لائن مشاورت فراہم کرنے والے نور کلینک کے ڈاکٹر رضوان الحق سے رابطہ کر لیا۔

ویب سائٹ مینگو باز کی رپورٹ کے مطابق اس نوجوان نے اپنے دلچسپ و عجیب سوال میں لکھا ”ڈاکٹر صاحب، میری عمر 19 سال ہے اور جلد ہی میری شادی ہونے والی ہے۔ میں ایک کھلاڑی ہوں۔ میں پوچھنا چاہتا ہوں کہ اگر میں روزانہ یا ہر دوسرے دن ازدواجی فرائض ادا کروں تو اس کا میرے سٹیمنا اور صحت پر اثر پڑے گا ؟ اگر اثر پڑتا ہے، اور میں ہفتے یا دو ہفتے بعد فرائض ادا کرنا چاہوں تو کیا وہ (بیوی) مان جائے گی؟ میں آپ کے جواب کا منتظر رہوں گا۔“

’اگر شادی کے بعد خوش رہنا چاہتے ہیں تو اپنے ہمسفر کے جسم کے ساتھ یہ کام کریں‘ جدید تحقیق میں سائنسدانوں نے خوش رہنے کا انتہائی دلچسپ راز بتادیا

یہ واضح نہیں کہ اس نوجوان کو ڈاکٹر صاحب نے کوئی جواب دیا یا نہیں، البتہ یہ بات ضرور قابل غور ہے کہ بھلا کوئی اور شخص کیونکر بتا سکتا ہے کہ ’وہ‘ ماں جائے گی یا نہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -