پاکستانی نوجوان کی دلہن کو بھارتیوں نے پاکستان ہی میں قید کر لیا

پاکستانی نوجوان کی دلہن کو بھارتیوں نے پاکستان ہی میں قید کر لیا
پاکستانی نوجوان کی دلہن کو بھارتیوں نے پاکستان ہی میں قید کر لیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)بھارت سے آکر پاکستان میں نکاح کرنے والی خاتون ڈاکٹر کو بھارتی ہائی کمیشن میں محصور کردیا گیا۔ شوہر نے بیگم کی رہائی کے لئے تھانہ سیکرٹریٹ پولیس کو درخواست دے دی ۔

چمن میں افغان فورسز کی فائرنگ، شہریوں کا افغان کونسل خانے کے سامنے احتجاجی ریلی

تفصیلات کے مطابق بھارت سے پاکستان آئی ڈاکٹر عظمیٰ بھارتی ہائی کمیشن میں محصور ہو کر رہ گئی ہے۔نئی دہلی کی شہری ڈاکٹر عظمی نے بونیر کے رہائشی طاہر سے پسند کی شادی کی تھی ۔ ڈاکٹر عظمیٰ یکم مئی کو واہگہ بارڈر سے پاکستان آئی تھی جبکہ ان کا نکاح 3مئی کو ہواتھا۔ نکاح کے بعد بھارتی خاتون کاغذات لے کر شوہر کے ہمراہ اسلام آباد میں بھارتی ہائی کمیشن گئی تھی ۔ مگر بھارتی ہائی کمیشن نے انہیں ہائی کمیشن سے باہر آنے سے روک دیا۔

ہمارا جینا اورمرنا عوام کے ساتھ ،حکمرانوں کو ان کے وعدے یاد دلاتے رہیں گے:آصف زرداری

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خاتون کے شوہر طاہر کا کہنا تھا کہ عظمی کے بھائی نے بھارتی ہائی کمیشن میں عدنان سے ملنے کا کہا تھا۔ بھارتی ہائی کمیشن نے موبائل فون بھی واپس نہیں کئے ، جب انڈین ہائی کمیشن سے اپنی اہلیہ کے بارے میں پوچھا گیا تو ہائی کمیشن کے عملے کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر عظمی یہاں نہیں۔میں نے بیوی کی بازیابی کے لئے طاہر نے تھانہ سیکرٹریٹ پولیس کو درخواست دے دی ۔

لاہور ہائی کورٹ بار کا وزیراعظم کے استعفیٰ کے مطالبہ سے دستبردار ہونے سے انکار،20مئی کو وکلاءنمائندہ کنونشن طلب کرلیا

تھانہ سیکرٹریٹ کی پولیس کا کہنا تھا کہ بھارتی ہائی کمیشن سے رابطہ کیا گیا ہے جس کے جواب میں انہوں نے ڈاکٹر عظمیٰ کی ہائی کمیشن میں موجودگی کی تصدیق کردی ہے اور مﺅقف اختیار کیا ہے کہ اس معاملے پر پولیس سے نہیں بلکہ دفتر خارجہ کے ذریعے سے ہی بات ہوگی۔

مزید :

قومی -