حماس نے اسماعیل ہانیہ کو اپنا سربراہ منتخب کر لیا

حماس نے اسماعیل ہانیہ کو اپنا سربراہ منتخب کر لیا
حماس نے اسماعیل ہانیہ کو اپنا سربراہ منتخب کر لیا

  

غزہ (ڈیلی پاکستان آن لائن)حماس کی مجلس شوریٰ نے اسماعیل ہانیہ کو اپنا نیا سربراہ منتخب کر لیا ہے۔

جامعہ الازہر کے وائس چانسلرکو عہدے سے بر طرف کردیا گیا

تفصیلات کے مطابق حماس کے سربراہ خالد مشعل نے اسماعیل ہانیہ کے انتخاب کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ حماس کی مجلس شوریٰ نے میرے بھائی اسماعیل ہانیہ کو اپنا سربراہ منتخب کر لیا ہے ۔ اور حماس کی سیاسی ونگ کی قیادت اسماعیل ہانیہ سنبھالیں گے۔ خالد مشعل حماس 10سال تک حماس کے قائد رہے ہیں، جبکہ اسماعیل ہانیہ مجلس شوریٰ سے مشاورت کے بعد حماس کی باقی قیادت کا اعلان کریں گے۔حماس کے ترجمان کے مطابق قیادت کی تبدیلی حماس کے دستور کے مطابق ہوئی ہے۔

قومی احتساب بیورو کسی بھی قیمت پر بدعنوانی کے خاتمے کے لئے پرعزم ہے : قمرزمان چوہدری

الجزیرہ ٹی وی کے مطابق اسماعیل ہانیہ سے قبل اس عہدے پر خالد مشعل فائز تھے۔اسماعیل ہانیہ کو ان کے پیش رو خالد مشعل کے برعکس حقیقت پسندانہ سوچ کا حامل سمجھا جاتا ہے۔ جبکہ حماس کے سربراہ منتخب ہونے کے بعد اسماعیل ہانیہ غزہ کے علاقے ہی میں قیام کریں گے۔54 سالہ اسماعیل ہنیہ کے حماس کی سربراہی سنبھالنے کے بعد توقع ہے کہ اس تنظیم کو عالمی سطح پر اپنی تنہائی کم کرنے میں مدد ملے گی۔

’میں 19 برس کا ہوں اور جلد میری شادی ہونے والی ہے لیکن مجھے ڈر ہے کہ کہیں شادی کے بعد۔۔۔‘ پاکستانی نوجوان نے انٹرنیٹ پر ڈاکٹر سے ایسا سوال پوچھ لیا کہ جان کر آپ بھی ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہوجائیں گے

اسماعیل ہانیہ1962ءمیں غزہ میں پیدا ہوئے، انہیں80کی دہائی میں اسرائیل کے خلاف پہلے انتفاضہ کے دوران کئی بار جیل میں بھی قید کیا گیا۔ بعد ازاں انہیں لبنان میں بھیج دیا گیا، ہانیہ کو 2006میں اس وقت شہرت ملی جب انہوں نے محمود عباس کے خلاف الیکشن میں تاریخی کامیابی حاصل کی۔ 2014ءمیں انہیں حماس اور الفتح کے درمیان معاہدے کے بعد وزارت عظمیٰ  کے عہدے سے مستعفی ہونا پڑا تھا۔

مزید :

بین الاقوامی -اہم خبریں -