الپوری‘ قائد جمعیت سے سیکورٹی واپس لینے پر احتجاجی مظاہرہ

الپوری‘ قائد جمعیت سے سیکورٹی واپس لینے پر احتجاجی مظاہرہ

  

الپوری(آفتاب حسین سے)جمعیت علماء اسلام کے قائد مولانا فضل الرحمن سے سیکورٹی واپس لینے کے خلاف جمعیت علماء کا شانگلہ میں شدید احتجاج،تحریک انصاف کی حکومت بوکھلاہٹ کے عالم میں اب اوچھے ہتکنڈوں پر اتر ائے ہیں،قائد جمعیت مو لانا فضل الرحمن پر کئی مرتبہ قاتلانہ حملے ہوئے ہیں جے یو ائی کے کارکنان سمیت ملک بھر کے سیاسی حلقوں میں گہری تشویش اور بے چینی کی لہر دوڑ گئی ہے سیکورٹی کے بحالی تک جمعیت علماء اسلام کا احتجاج جاری رہے گا۔ ان خیالات کا اظہارجے یوائی شانگلہ کے ضلعی آمیرقاری ذین اللہ،جنرل سیکرٹری شیرعالم تحصیل آمیرمولانا فضل خالق تحصیل الپوری امیرمولانا فضل خالق،تحصیل جنرل سیکرٹری سیف الرحمن ایڈوکیٹ نے اتوار کے روز شانگلہ پریس کلب الپوری میں ایک پرہوجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس مو قعہ پر جمعیت علماء اسلام کے ڈپٹی جنرل سیکرٹری قاری سعیداللہ،دواخان دیگر رہنماؤں بھی موجود تھے۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ضلعی آمیرقاری ذین اللہ کا کہنا تھا کہ حکومت کے ایسے اقدامات ناقابل برداشت ہے،جمعیت علماء اسلام بھرمذاحمت کرے گی،ایسے اقدامات سے کٹ پتلی حکومت کی بدنیتی،تعصب غیرجمہوری اقدامات نظرآرہا ہے۔جمعیت علماء اسلام کے مرکزی امیرفضل الرحمن سے اچانک سیکورٹی واپس لیناقابل مذمت ہے،بد امنی اور مہنگائی کے سبب عوام مشکلات کا شکار ہوگئے ہیں جبکہ حکومت اپنی ناکامی چھپانے کیلئے عوام کی توجہ ہٹا رہی ہے۔جمعیت علماء اسلام اس ملک میں سب سے بڑی جماعت ہے مولانا پر تین بار خودکش حملے ہوئے ہیں ان کے گھر پر حملے ہوئے ہیں وہ قوم ملک وملت کا اثاثہ ہے بیرونی طاغوتی قوتیں پاکستان میں مذہبی جماعتیں کمزور کرنے کی کوشیش کررہے ہیں۔اگر مولانا کو کچھ ہوگیا تو اس کی ساری ذمہ واری حکومت پر عائد ہوگی۔انصارلاسلام مولانا کی حفاظت کیلئے تیار ہیں۔پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ضلعی جنرل سیکرٹری شیرعالم خان نے کہا کہ عمران خان کی حکومت ملک کا خاتمہ چاہتی ہے صوبہ میں پانچ سال جتنا کرپشن ہوا ہے کسی نے پہلے نہیں کی ہے ہم مولانا کی سیکورٹی کیلئے خود حاضر ہیں لیکن یہ حکومت کی ذمہ داری بنتی ہے یہ اقدام مین مراچ کو سبوتاژ کرنے کیلئے اوچھے ہتکنڈے استعمال کررہی ہے یہ ملک ہمارے ٹیکس سے چل رہا ہے ہمارے ساتھ اٹھ لاکھ افراد ہیں اور عید کے بعد یہ حکومت ختم ہوجائے گا مانسہرہ کے میلن مارچ کیلئے دو سو گاڑیوں کا قافلہ شانگلہ سے گیا تھا اور اور اسلام آباد میلن مارچ میں بیس ہزار افراد لیکے جائیں گے۔انھوں نے حکومت سے مطالبہ کتے ہوئے کہا کہ مولانا فضل الرحمن کی سیکورٹی فوری بحال کیا جائے بصورت دیگر ہم خود سیکورٹی سرانجام دیں گے۔جمعیت علماء اسلام تمام سیاسی جماعتوں کے قائدین کو موئثر سیکورٹی فراہم کرنے کا مطالبہ کرتی ہے۔۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -