آئی ایم ایف پاکستان کوپتھر کے دور میں دھکیل رہا ہے‘ اکانومی واچ

آئی ایم ایف پاکستان کوپتھر کے دور میں دھکیل رہا ہے‘ اکانومی واچ

  

لاہور(کامرس ڈیسک) پاکستان اکانومی واچ کے صدر ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے کہا ہے کہ آئی ایم ایف پاکستان کوپتھر کے دور میں دھکیل رہا ہے۔یہ ادارہ کاروباری سرگرمیوں کے حوصلہ افزائی کے بجائے انکی تباہی اور ملک کو عوام کا قبرستان بناکرہی مطمئن ہوگا۔پاکستان آیا ہوا آئی ایم ایف کا مشن معیشت کی تباہی اور عوام کش پالیسیوں کاتسلسل یقینی بنا کر واپس جائے گا۔یہ ادارہ کبھی عوام کو با اختیار بنانے یا ٹیکس نظام سہل کرنے کی اجازت نہیں دے گاتاکہ ملک ہمیشہ اسکا محتاج رہے۔ ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ بیوروکریسی حکومت اور عوام کے مابین فاصلے پیدا کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے اور انکے مشوروں پر عمل کر کے حکومت عوام اور معیشت کے لئے خطرہ بن رہی ہے۔معیشت کو مستحکم کرنے کے بہانے کمزور اور مظلوم طبقات کو ہدف بنایا جا رہا ہے۔ امیروں سے ٹیکس لینے کے بجائے غریبوں کی زندگی روز نہ روز مشکل کی جا رہی ہے۔عوام کے خلاف اعلان جنگ کر دیا گیاہے اور انکے حقوق پامال کئے جا رہے ہیں جبکہ مختلف مافیا اور بزنس مینوں کے گینگ ملک پر راج کر رہے ہیں۔آئی ایم ایف نے شرح سود بڑھانے، روپے کی قدر کم کرنے بجلی کی قیمت میں پچیس فیصد اضافہ اور نجکاری کا مطالبہ کر دیا ہے جبکہ پٹرول کی قیمت میں اضافہ کی خبر سے عوام سہم گئے ہیں۔ ان اقدامات سے پیداوار، برامدات اور روزگار متاثر ہو گا جبکہ معیشت مجموعی طور پر سکڑ جائے گی۔مہنگائی کی وجہ سے جلد ہی سارا ملک غذائی قلت میں مبتلا ہو کر تھر کا منظر پیش کرسکتا ہے جہاں بھارت کی طرح خودکشیاں عام ہو سکتی ہیں۔آئی ایم ایف کے احکامات آئین میں شامل بنیادیانسانی حقوق بشمول روٹی کپڑا مکان تعلیم علاج وغیرہ اور حکومت کے منشور وعدوں اور دعووں سے متصادم ہیں۔

مزید :

کامرس -