صہیونی فوج کی غزہ پٹی پر بمباری ،5فلسطینی شہید زخمی ،حماس پر حملہ درست تھا امریکہ کی اسرائیل کو تھپکی

  صہیونی فوج کی غزہ پٹی پر بمباری ،5فلسطینی شہید زخمی ،حماس پر حملہ درست تھا ...

  

مقبوضہ غزہ،واشنگٹن(این این آئی،آن لائن، مانیٹرنگ ڈیسک)اسرائیلی فوج نے محاصرہ زدہ غزہ کی پٹی پر اتوار کو علی الصبح جنگی کشتیوں کی مدد سے حماس کے ٹھکانوں پر گولہ باری کی ہے۔صہیونی فوج نے شہریوں کے مکانات، دفاتر اور فلسطینی مزاحمتی مراکز پر بم باری کی جس کے نتیجے میں ایک شیرخوار اور حاملہ خاتون سمیت پانچ فلسطینی شہید کر دئیے گئے، جبکہ 40 فلسطینی زخمی ہوئے ۔بتایا گیا ہے کہ اسرائیلی فوج نے غزہ میں 4بڑی اور اونچی رہائشی عمارتوں کو تباہ کردیا، تین گھروں کو میزائلوں سے نشانہ بنایا گیا، ابلاغ کے3 اداروں پر بھی بمباری کر کے انہیں مٹی میں ملا دیا ۔گزر کاہیں بند کرنے کے بعدفلسطینی ماہی گیروں کوبھی روک دیا گیا ہے۔ اسرائیلی فوج نے کہا کہ غزہ سے قریباً 200 میزائل فائر کیے گئے۔ مزید سخت کارروائی بھی کی جائے گی ۔ بمباری رمضان المبارک کی آمد کے موقع پر کی گئی۔ اسرائیل کا الزام ہے کہ فضائی کارروائی حماس کی جانب سے 250راکٹ فائر کرنے کے جواب میں کی گئی۔ اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے کابینی کے اجلاس میں وسیع پیمانے پر حملے جاری رکھنے کے احکامات جاری کئے ہیں اور فوج کو ہدایت جاری کی ہے کہ غزہ پٹی میں حملے جاری رکھے جائیں اور حکم دیا ہے کہ فوجیوں کی تعیناتی عمل میں لائی جائے ۔غزہ پٹی سے رات گئے داغے جانیوالے ایک راکٹ کے نتیجے میں ایک اسرائیلی شخص ہلاک ہو گیا ، یہ بات حکام نے اتوار کے روز کہی ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ یہ شخص راکٹ حملے میں شدید زخمی ہونے کے بعد ہسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا ہے ۔ غزہ پٹی میں اسرائیل اور فلسطینی جنگجوﺅں کے درمیان 2008ءکے بعد تین جنگیں ہو چکی ہیں اور چوتھی کا خدشہ موجود ہے۔

اسرائیل حملہ

مزید :

علاقائی -