اسلام آباد انتظامیہ کا قبضہ مافیا کیخلاف آپریشن،اے ایس آئی کی مخا لفت 

  اسلام آباد انتظامیہ کا قبضہ مافیا کیخلاف آپریشن،اے ایس آئی کی مخا لفت 

  

اسلام آباد(آن لائن)وفاقی دارالحکومت میں وزارت داخلہ کی رٹ کو اسلام آباد پولیس کے ایک چھوٹے سے آفیسر نے چیلنج کر دیا ۔ضلعی انتظامیہ کی جانب سے قبضہ مافیا کےخلاف آپریشن میں اے ایس آئی کھل کر مافیا کی پشت پر سوار ہو کر انتظامیہ کے خلاف کود آیا ۔ گزشتہ روز دلچسپ واقعہ اس وقت پیدا ہوا جب وزارت داخلہ کے حکم پر ضلعی انتظامیہ نے لوہی بھیرکے علاقہ میں غیر قانونی تعمیرات کےخلاف آپریشن شروع کیا، تو ایس ایچ او لوہی بھیر فیاض شنواری کی غیر موجودگی میں اے ایس آئی بلال نے ملک اشتیاق نامی شخص سے بھاری نذرانہ وصول کر کے سی بی آر ٹاﺅن میں آپریشن روکوانے کےلئے موقع پر پہنچ گیا ۔ ذرائع نے کہا کہ قبضہ گروپ ملک اشتیاق کےساتھ سول کوٹ کیس ماتحت عملہ بھی ملا ہوا ہے ،تاہم دوسری جانب ضلعی انتظامیہ آمد کے بعد چھوٹو پولیس آفیسر موقع سے غائب ہونے میں کامیاب ہو گیا ۔ایڈیشنل ایس ایچ او سب انسپکٹر نیاز احمد نے اس موقع پر آپریشن مکمل کرنے اور مافیا کےخلاف کارروائی کروانے کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہاکہ وفاقی پولیس شانہ بشانہ ضلعی انتظامیہ کےساتھ ہے ۔ اے سی رولر سعد بن اسد موقع پر موجود تھے آپریشن کےخلاف رکاوٹ بننے کےخلاف کوئی تادیبی کارروائی عمل میں نہ لائی گئی ۔ایڈیشنل ایس ایچ او نے ضلعی انتظامیہ کو کہا کہ اے ایس آئی بلال ون فائیو پر کال موصول ہونے پر موقع پر پہنچا تھا علاوہ ازیں ان کا ان معاملے میں کوئی خاص تعلق نہیں ہے ۔

قبضہ مافیا

مزید :

علاقائی -