پاکستانی کھلاڑی انگلینڈ کیخلاف کاہلی کا شکار نہ ہوں:اقبال قاسم

پاکستانی کھلاڑی انگلینڈ کیخلاف کاہلی کا شکار نہ ہوں:اقبال قاسم

  

لاہور(سپورٹس رپورٹر)سابق چیف سلیکٹر اور اپنے دور کے بہترین لیفٹ آرم اسپنر اقبال قاسم کا کہنا ہے کہ پاکستانی کھلاڑی انگلینڈ کیخلاف سیریز کے دوران کاہلی یا غفلت کا شکار نہ ہوں کیونکہ پریکٹس میچوں میں کامیابی الگ بات مگر ابھی ان کا حقیقی امتحان ہونا باقی ہے۔اقبال قاسم کا کہنا تھا کہ قومی ٹیم نے ابتدائی تینوں پریکٹس میچوں میں کامیابی حاصل کر کے دورے کا عمدگی سے آغاز کیا جس پر ہیڈ کوچ اور کپتان نے سکون کا سانس لیا ہوگا لیکن ان میچوں میں کامیابی پر زیادہ خوشی کی ضرورت نہیں کیونکہ یہ مقابلے سے بھرپور نہیں کہے جا سکتے اور پاکستانی ٹیم کو یاد رکھنا چاہئے کہ اسے اپنی غلطیوں سے سیکھتے ہوئے کسی بھی موقع پر ریلیکس نہیں ہونا ہے جیسا کہ ماضی میں بھی دیکھا جا چکا لہٰذا گرین شرٹس انگلینڈ کیخلاف ون ڈے سیریز میں پوری سنجیدگی کے ساتھ عمدہ کھیل کا مظاہرہ کریں۔سابق اسپنر کا کہنا تھا کہ موجودہ ٹیم بہت اچھی دکھائی دے رہی ہے جسے بڑے میچوں سے قبل ضروری مشق کا موقع بھی مل چکا ہے اور بابر اعظم کی اچھی فارم کے علاوہ دیگر کھلاڑی بھی عمدگی سے کھیل رہے ہیں تاہم کپتان سرفراز احمد کو چاہئے کہ وہ فرنٹ سے لیڈ کرتے ہوئے رنز اسکور کرنے کی کوشش کریں کیونکہ اس سے ٹیم کا اعتماد مزید بڑھ جائے گا۔ان کا کہنا تھا کہ قومی ٹیم عمر اکمل اور کامران اکمل جیسے بیٹسمینوں کی کمی محسوس کرے گی جو کسی بھی پوزیشن پر کھیل سکتے ہیں اور انہیں اچھا تجربہ بھی حاصل ہے اور اگر وہ سلیکٹر ہوتے تو دونوں کو کبھی نظر انداز نہ کرتے۔ان کا کہنا تھا کہ یاسر شاہ اگرچہ شاداب خان کے برے متبادل نہیں لیکن نوجوان لیگ اسپنر کی بالکل الگ بات ہے جو گرین شرٹس کا سرمایہ اور منفرد صلاحیتوں کے مالک ہیں۔اقبال قاسم کے مطابق محمد حسنین میں حقیقی فاسٹ بالر کی جھلک محسوس ہوتی ہے لیکن وہ میگا ایونٹ کیلئے قدرے ناتجربہ کار ہیں کیونکہ ہر ٹیم اس موقع پر بہترین پلیئرز چاہتی ہے اور اس پہلو کے پیش نظر انہیں کھلانے کی جلدی نہیں کرنا چاہئے تھی۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -